certifired_img

Books and Documents

Books and Documents

The Arab-Israeli conflict is the single most enduring as well as the most intensely scrutinized topic of Middle Eastern politics in the past century. Diplomatically, it compares to the Eastern Question concerning the future of the Ottoman Empire that earlier haunted European statecraft: both endured for more than a century, engaged a large cast of regional and international players, and consumed a disproportionate amount of attention. I consider my ideas about resolving the Arab-Israeli conflict as one of my two most significant contributions to American foreign policy.....

 

ہمارے معاشرے میں تعلیم کا یہ دوھرا معیار کوئی نئی بات نہیں کیونکہ اس کا تعلق طبقاتی معاشرے سے ہوتا ہے مگر اس کا مزید طاقتور بنانے میں برطانوی اقتدار کا مفاد بھی تھا لیکن آزادی کے بعد بھی معاشرے میں اس تفریق کو برقرار رکھا گیا کیونکہ اس صورت میں ان کی حیثیت مستحکم او ر مضبوط رہی اس دوہرے معیار کو مزید اس وقت اور تقویت ملی جب تعلیم کو مکمل طور پر اسلامی بنانے کا فیصلہ ہوا اور یہ اسلامی تعلیم عام اسکولوں او ر تعلیمی اداروں تک محدود ہے۔

 

The Qur’anic pronouncements on justice as listed in the foregoing are clear, concise and unambiguous and together establish one of its revolutionary principles. Until the advent of Islam and for centuries to come, the poor and the weak were denied justice while the rich and the mighty enjoyed a privileged form of justice that institutionalized oppression and injustice in human society. The Qur’an abolished all this, and paved the way for the establishment of societies, in which the weakest could take the strongest to the court of law and get justice.....

 

ہمارے ملک میں بھی حکمران طبقے اسی ذہن و دماغ کے ساتھ تاریخ کو اپنے تسلط میں رکھ کر اسے مسخ کرتے ہیں اور اس کے ذریعہ اپنی بدعنوانیوں کو صحیح ثابت کرتےہیں ، ان کی کوشش ہوتی ہے کہ اپنی غلطیوں اور حماقتوں کو یا توبالکل ختم کردیا جائے یا انہیں اس طرح سے پیش کیا جائے کہ وہ جھوٹ کے لبادے میں روپوش ہوجائیں وہ اپنے وقار اورعزت کو جھوٹی روایات کی بنیاد پر باقی رکھنا چاہتے ہیں پاکستان میں اس کی مثال محمود الرحمٰن کمیشن رپورٹ سےدی جاسکتی ہے جسے عوام کے اصرار کے باوجود اس بہانے کی بنیاد پر نہیں چھپا گیا کہ اس میں ملک کے بارے میں ایسی احساس معلومات ہیں کہ ان کے ظاہرہونے سے اس کے تحفظ کو خطرہ پیدا ہوجائے گا ۔

 

The film won the Grand Jury Prize at the Indian Film Festival of Los Angeles in 2004 and was nominated for the Golden Leopard award at the Locarno International Film Festival the same year. Black Friday's music was provided by the rock band Indian Ocean and the title track Bandeh has since become a contemporary cult hit......

 

ایک زمانے تک تاریخ اسکولوں میں پڑھائی جاتی تھی مگر آہستہ آہستہ اسے اسکولوں سے ختم کرکے اس کی جگہ معاشرتی علوم کو متعارف کیا گیا ہے اس لئے طالب علموں کو تاریخ کے بارے میں اب کوئی معلومات نہیں رہیں چونکہ کالجوں میں یہ اختیاری مضمون ہے اس لئے یہ طالب علم کی مرضی پر ہوتاہے کہ وہ اسے لے یا نہ لے اکثریت اس مضمون کو اس لئے اختیار نہیں کرتی کہ وہ اسکول کے زمانے میں اس سےناواقف ہوتے ہیں اور انہیں اس میں کوئی دلچسپی نظر نہیں آتی ۔

 

حقیقت میں دیکھا جائے تو تاریخ کا کام یہ ہے کہ وہ لوگوں کے شعور کو بڑھائے اور ان کی فکر میں وسعت پیدا کرے او ریہ تب ہی ممکن ہے جب تاریخ کو ‘‘عالمی اور انسانی تاریخ کی حیثیت سے پڑھایا جائے کیونکہ جب تاریخ میں عالمی انسانیت کاتصور آئے گا تو اس میں مذہب ، نسل ، فرقہ واریت اور قومیت کے لئے کوئی جگہ نہیں ہوگی کیونکہ عالمی تاریخ اس زمین پر انسان کے ارتقاء پر بحث کرتی ہے اور اس میں انسانی معاشرے کے تمام پہلو آجاتےہیں ۔

 

تاریخ کا ایک المیہ یہ ہوا کہ سیاست دانوں اور بااقتدار طبقے کے زیر اثر آکر ان کی تمام کاوشیں ، سیاسی اور معاشی خرابیوں کو صحیح ثابت کرنے کےلئے استعمال ہونے لگیں ایک مرتبہ جب معاشرے میں آمرانہ طرز حکومت قائم ہوگئی اور طاقتور ادارے اس کی مدد کی غرض سےتشکیل پا گئے تو پھر وہ تمام پہلو جو جمہوریت ، لبرل ازم ، سیکولرازم اور سوشلزم کے بارے میں عوام کو معلومات فراہم کرتے تھے اور جن کی مدد سے وہ سیاسی و معاشی اور معاشرتی حالات کا تجزیہ کرسکتے تھے ان سب کو تاریخ کے مطالعہ سے خارج کردیا گیا اس مرحلے پر پیشہ ور اور سرکاری مورخین نے وہی کام سر انجام دیا جو ان سےپہلے درباری مورخین کیا کرتے تھے۔

 

جب مسلمانوں نے ہندوستان میں اپنی حکومت کی بنیاد رکھی تو مساوات کو یہاں بھی عملی جامعہ نہیں پہنا یا گیا ۔ یہاں صورت حال یہ تھی کہ محکوم رعایا غیر مسلم تھی اور اکثریت بھی تھی جب مسلمان اقلیت میں ۔ اس کا حل مسلمان حکمران طبقے نے یہی نکالا کہ اکثریت پر قوت و طاقت کے ذریعے حکومت کی جائے اس بات کی کوئی کوشش نہیں ہوئی کہ ہندوستانی معاشرے میں جہاں ذات پات کی تقسیم تھی وہاں نچلی ذات کےلوگوں  کا سماجی مرتبہ بڑھا کر ان کی ہمدردیاں حاصل کی جائیں جو لوگ مسلمان بھی ہوئے تو ان کو معاشرے میں برابر کا درجہ نہیں دیا گیا۔

 

ہمارے ہاں تاریخ کو مذہب سے منسلک کرکے اسے اسلامی تاریخ یا مسلمانوں کی تاریخ سے موسوم کرنا شروع کردیا۔ اسلامی تاریخ کی اصطلاح نے ہمارے مورخین کو خاصی الجھن میں مبتلا کردیا کیونکہ جب اسلامی تاریخ میں غیر اسلامی فعال نظر آئے تو یہ سوال پیدا ہوا کہ کیا سب اسلامی تاریخ ہے۔؟ اسلامی تاریخ کو اس الجھن سے نکالنے کےلئے ہمارے مورخین نے یہ فرق پیدا کرنے کی کوشش کی کہ اسلامی تاریّخ میں صرف رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اور خلفائے راشدین کے عہد تک محدود ہے۔

 

عالمی تہذیبوں کے مطالعے کے بعد ہی ہم اس نتیجے پر پہنچیں گے کہ تہذیب و تمدن کی تخلیق کسی ایک قوم کی اجارہ داری نہیں رہی ہماری تمام روایات اور اقدار کی جڑیں انہی عالمی تہذیبوں میں ملیں گی۔ ہمارے عقائد نظریات اور توہمات انہی تہذبیوں میں پائیں جائیں گے ۔ ہمارے معاشرہ کوئی تنہا اور مجروشئے نہیں بلکہ عالم برادری کا ایک حصہ ہیں اور ہماری تہذیب کی جڑیں عالمی تہذیبوں میں ہیں ۔

 

ہماری تاریخ نویسی کا سرمایہ اس وقت ہمارے پاس تین قسموں میں ہے۔ عہد سلاطین و عہد مغلیہ کی تاریخ نویسی، عہد برطانیہ کی تاریخ نویسی، اور برصغیر کی آزادی کے بعد کی تاریخ نویسی۔ ان تینوں قسموں کی تاریخ نویسی کی کیا کیا خصوصیات ہیں؟ او رانہیں کن رجحانات کے تحت لکھا گیا ہے؟ ان سوالات کا جواب دینے کے لئے ان کا مختصر تنقیدی جائزہ لیا جائے گا۔

انسانی تاریخ میں ہر نظریے کے ماننے والوں کی جانب سے یہ کوششیں ہوتی رہی ہیں کہ وہ زوال پذیر ، فرسودہ اور مضمحل معاشرے کی ترقی کاخواب اسی میں دیکھتے ہیں کہ اپنے نظریے کا دوبارہ سےاحیاء کیا جائے۔ اس کی تعلیمات کو اسی شدت کےساتھ نافذ کیا جائے ۔ لیکن یہ ایک تاریخی حقیقت ہے کہ ایسی تمام تحریکیں چاہے ان کاتعلق کسی نظریے سے ہو ہمیشہ ناکام رہی ہیں ۔ تاریخ اس بات کی شاہد ہے کہ آج تک کوئی نظریہ اپنی قوت و طاقت کھونے کےبعد دوبارہ اس قابل نہیں ہوا کہ اس کا احیاء کیا جاسکے ۔

انگریزی حکومت کے زمانے میں جو ذہنی و فکری تبدیلیاں یورپ میں ہورہی تھیں، اس سے ہندوستان بھی متاثر ہوا اور اس اثر سے یہاں اصلاحی تحریکیں شروع ہوئیں، جدید تعلیم کا آغاز ہوا اور اہل ہندوستان قدیم دور سےنکل کر جدید دور میں داخل ہوگئے یہ کہنا مشکل ہے کہ ہندوستان نے جو کچھ انگریزی اقتدار کے زمانے میں حاصل کیا یہی کچھ وہ آزادانہ طور پر کتنے عرصے میں اور کیا کیا قربانیاں دے کر حاصل کرتا ، یہ صحیح ہے کہ زمانے کی رفتار کو کوئی استبدادی نظام نہیں روک سکتا ، فروسودہ ادارے اور روایات ختم ہوکر رہتی ہیں ۔لیکن یہ عمل ترقی یافتہ غیر ملکی اقتدار کی صورت میں تیز ہوجاتا ہے۔

 

تاریخ میں یہ اصول عام رہا ہے کہ جب کسی ملک پر غیرملکی قابض ہوجاتےہیں تو مفتوح قوم کا ایک طبقہ فاتح سےمفاہمت کرکے اس کے ساتھ اقتدار میں شریک ہوجاتا ہے۔ چنانچہ سکندر لودھی کےزمانے میں کاسیتھوں نے فارسی زبان سیکھنی شروع کی تاکہ حکومت کی ملازمتیں انہیں مل سکیں ۔ ان کی فارسی زبان دانی کے باوجود بجائے سیکھنی شروع کی تاکہ حکومت کی ملازمتیں انہیں مل سکیں ۔ ان کی فارسی زبان دانی کے باوجود بجائے اس کے ان کی عذر ہوتی ، ان کا مذاق اڑایا گیا اور ان کی فارسی میں ہینگ کی بو آتی رہی ۔

 

معاشرےمیں خواص اور عوام کے مفادات ہمیشہ علیحدہ علیحدہ ہوتےہیں ۔ اس لئے ایک ایسے معاشرے میں جہاں بادشاہت ہو ، اور شخصی حکومت ہو وہاں حکمران کی طاقت لامحدود ہوتی ہے یہ اس کے اختیار میں ہوتا ہے کہ جسے چاہے نواز دے اور جسے چاہے ذلیل و خوار کردے۔ اس کے منہ سے نکلا ہوا ہر لفظ قانون ہوتاہے اور حکومت کے تمام ادارے اس کی مرضی و خواہش کے تابع ہوتے ہیں۔ اس لئے ایک ایسے معاشرے میں خواص کا طبقہ جس میں امراءفوج کے جنرل و افسر، دفتروں کے عہدیدار اور ملازمین شاملہ ہوتےہیں اپنے حکمران کی خوشنودی کے خواہاں رہتے ہیں۔

With time, the Qur’an admonishes against various mundane as well as grave vices such as foul talk, miserliness, bearing a false witness, adultery (Zina)3 killing of innocent people, and all manners of abominable acts (Fawahishah),4 and reiterates its exhortation against unwedded relationships....

فن تعمیر کی اس تعریف کو ذہن میں رکھتے ہوئے جب ہم ہندوستان میں مسلمانوں کے عہد میں جو تعمیرات ہوئیں ان پر نظر ڈالتے ہیں تو یہ بات واضح ہوکر ہمارے سامنے آجاتی ہے کہ فن تعمیر ، جس  تصور یا جس ذہن کی نمائندگی کرتاہے وہ بادشاہ کی الوہیت اور عظمت ہے اور اس کا اظہار صرف ایک طبقے کی ثقافت ہے اور یہ حکمران طبقہ حکمرانوں  امراء اور جاگیرداروں کا تھا ۔ ان تمام عمارات میں  جو انہوں نے تعمیر کرائیں ،ان میں ان کا محدود طبقاتی پس منظر اور ذہنیت موجود ہے۔

 

بادشاہ کے بعد امراء اور عہداروں کاطبقہ تھا جو اپنے مرتبے اور منصب کے لحاظ سے کئی درجوں میں تقسیم تھا اس درجے بندی کےتحت مجلسی آداب کی بھی تشکیل ہوئی ۔ مثلاً اگر ایک اعلیٰ درجے کے امیر اور اس سے کم درجے کے امیر کی ملاقات ہوتی تو اعلیٰ درجے والا اپنی نشست پر بیٹھا رہتا اور کھڑے ہوکر استقبال نہ کرتا جب کہ اگر مساوی درجے کاکوئی امیر آتا تو اس کاکھڑے ہوکر استقبال کیا جاتا اور اسے برابر اپنے ساتھ مسند پربٹھا تا اس کی مناسب خاطر تواضع کی جاتی اور رخصت کے وقت اسے دروازے تک چھوڑنے جاتا۔

 

ہندوستان میں مسلمانوں نےابتدائی زمانے میں مذہب کو ہندوؤں کے خلاف استعمال کیا۔ لیکن جب مسلمان جاگیر داروں اور امراء میں طاقت کے حصول کی خاطر جنگیں ہوئیں اور ان کی ملازمتوں میں ہندو اور مسلمان ساتھ ساتھ آئے تو پھر کسی ایسے نظریے کی تلاش ہوئی جسے ایک فرد یا خاندان کو ان کے لئے استعمال کیا جا سکے ۔ چنانچہ یہ وہ مخصوص حالات تھے جن میں نمک حلالی کا تصور ایک نئے انداز سےپیدا ہوا ۔ جس کے تحت ایک خادم یا ملازم کو اخلاقی طور پر اس کا پابند کیا گیا کہ وہ اپنے مالک یا آقا کے ساتھ وفادار رہے اور اس کے خاندان کی خدمت خلوص دل سے کرے۔

 

شاہ جہاں کی دولت مندی اور خوشحالی کےتذکرے معاصرین کی تاریخ میں بہت ملتے ہیں اسی لئے اس عہد مغلیہ کا سنہری دور کہا جاتاہے اس سنہری دور کی مثالیں آج بھی تاج محل اور لال قلعہ کی شکل میں موجود ہیں جب کہ اس عہد میں مفلس و غریب عوام بھوک و فاقہ کے ہاتھوں خاموش سے زمین کی آغوش میں پنہا ں ہوکر مٹ گئے اور اپنی مفلسی کے نشانات بھی اپنے ساتھ لے گئے اس سنہری دور میں دکن اور گجرات میں جب قحط پڑا تو رحمدل بادشاہ نے برہان پور ، احمد آباد اور سورت میں لنگر خانے قائم کرائے اور دو شنبہ کو جو شاہ جہاں کی تخت نشینی کا دن ہونے کی وجہ سے مبارک تھا۔

 

مسلمانوں کی حکومت کے قیام سےدوسری تبدیلی یہ آئی کہ سیاسی و معاشی و سماجی وجوہات کی بنا پر یہاں کی مقامی آبادی میں کچھ لوگ مسلمان ہونا شروع ہوگئے ۔ ان کارد عمل اہل اقتدار طبقے پر یہ ہوا کہ اگر ان کےساتھ مساوات کاسلوک کیاجائے تو انہیں بھی اقتدار اور مراعات میں شامل کرنا پڑے گا اس لئے اقتدار اور مراعات سے محروم کرنے کےلئے اس طبقے کو نسلی اعتبار سےکمتر اور نیچا سمجھا گیا اور انہیں سماجی و معاشرتی و سیاسی زندگی میں برابر کا درجہ نہیں دیا گیا ۔

 

This attempt might seem bizarre for some, for what, they might ask, might the Quran, which appeared centuries after Jesus, have to contribute to our understanding of the historical Jesus? A great deal, a study of this voluminous tome will reveal, for Jesus is honoured as a prophet in the Quran, which refers to him in several verses. Belief in Jesus is integral to faith in Islam. Muslims regard Jesus as a ‘Muslim’ (that is, one who has submitted to God) and as having preached Islam—that is, submission to the one God.....

Without any hues of divine enlightenment, Lesley, a Jew settled in Seattle, talked of the Prophet as a boy who had very unusual and trying circumstances. A boy who had lost his father before he was born, he lost his mother when he was all of six. Brought up by his grandfather, his was a remarkable rise from the edges of the society to a reasonably well off and trusted business agent by the time he was getting into middle age. Except that all this paled when compared to what transpired on Mount Hira when he was 40, the moment he got the first revelation. It is here that Lesley rose above various biographers and put Muhammad’s reaction –– he was shaken to the bone –– in a dispassionate manner, casting aside various accounts of mythical peace and bliss…..

 

ہمارے معاشرے کی طبقاتی تقسیم میں مالک وملازم ’ آقا و خادم ، سرپرست و زیر دست اعلیٰ و ادنیٰ کی اخلاقی قدریں بھی جدا جدا ہیں ۔ مثلاًؑ ایک خادم اورملازم کےلئے ضروری ہے کہ وہ اپنے آقا کا وفادار ہو اور اس کی اطاعت و فرمانبرداری کرے۔ اس کے احکامات کےبے چوں چرا تعمیل کرے یہاں تک کہ ضرورت پڑنےپر اپنے آقا کی خاطر جان تک دے دے۔ خادم میں یہ احساسات و جذبات کیوں پیدا ہوتےہیں؟ اس حقیقت کو سمجھنے کےلئے آقا اور ملازم کی شخصیتوں کو دیکھا جائے :آقا وہ شخص ہے جو اپنے ملازم یا خادم کو معاش فراہم کرتاہے اس کی ضروریات زندگی پوری کرتا ہے ۔



Get New Age Islam in Your Inbox
E-mail:
Most Popular Articles
Videos

The Reality of Pakistani Propaganda of Ghazwa e Hind and Composite Culture of IndiaPLAY 

Global Terrorism and Islam; M J Akbar provides The Indian PerspectivePLAY 

Shaukat Kashmiri speaks to New Age Islam TV on impact of Sufi IslamPLAY 

Petrodollar Islam, Salafi Islam, Wahhabi Islam in Pakistani SocietyPLAY 

Dr. Muhammad Hanif Khan Shastri Speaks on Unity of God in Islam and HinduismPLAY 

Indian Muslims Oppose Wahhabi Extremism: A NewAgeIslam TV Report- 8PLAY 

NewAgeIslam, Editor Sultan Shahin speaks on the Taliban and radical IslamPLAY 

Reality of Islamic Terrorism or Extremism by Dr. Tahirul QadriPLAY 

Sultan Shahin, Editor, NewAgeIslam speaks at UNHRC: Islam and Religious MinoritiesPLAY 

NEW COMMENTS

  • An excellent idea. Income tax should be levied on everything that earns INCOME, religious....
    ( By Skepticles )
  • Naseer sb., Are you suggesting that if a woman goes out of her house "with her hair or face uncovered," her husband can....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Poor Naseer sb. is again reduced to making personal insults. He thinks denouncing supremacism is equivalent to asserting political....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Hats Off is more interested in denigrating Islam than in condemning blasphemy.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • " Crucially important is for us to realise that in honouring each of these iconic figures, we honour human.....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • "Another Saudi Woman, Nojoud al-Mandeel, Takes To Twitter to 'Escape Abusive...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Muslims seem always to have seen women as a threat. The following is from last week's Daily Star: "Hefajat-e Islam....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Why is it hard for our prestigious imams and ulama to proclaim loudly, unequivocally and repeatedly on radio, TV and ...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • When a man gets inspired by theories and characteristics of wahabiyat, he is unable to get true enlightenment to understand ....
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • 'Abdullah ibn Mas'ud reported that the Prophet, may Allah bless him and grant him peace, said, "No one who has an atom's weight of pride ...
    ( By Naseer Ahmed )
  • @Ghulam Ghaus Siddiqi sb, What do you say about Kashmir and its growing Wahabiyat?....
    ( By Kaniz Fatma )
  • لا حول ولا قوة إلا بالله العلي العظيم'
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • “The gnosis and knowledge of men is, compared with the Prophet’s, like the drop of moisture which oozes out of the top of a bound ...
    ( By Naseer Ahmed )
  • I agree that all blasphemy laws must be struck down. There are other laws to deal with acts that disturb public order which are sufficient.' ...
    ( By Naseer Ahmed )
  • Placing a command in its historical perspective is to show that Allah's laws have been the same in the past, they remain unchanged in the ...
    ( By Naseer Ahmed )
  • Allah is the Creator of this earth: Chapter 10 Jonah سورة يونس - Yunus: Verse 3 إِنَّ رَبَّكُمُ اللَّهُ الَّذِي خَلَقَ السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضَ فِي سِتَّةِ أَيَّامٍ ثُمَّ ...
    ( By zuma )
  • GM sb has given his understanding of verse 4:34 as follows: “4:34 is not about disloyalty or adultery. It is about obedience and disobedience ....
    ( By Naseer Ahmed )
  • Islam is the religion of Allah from creation and the religion brought by 124000 prophets over 70,000 years to all regions of the earth. Islam ...
    ( By Naseer Ahmed )
  • Miss Pamela K. Taylor, Your idea are striking and precious. I would ....
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • Rejecting subjectivity and objectivity might be as much harmful for values of knowledge as the so ....
    ( By Ghulam Ghaus غلام غوث الصديقي )
  • Growing militancy in Kashmir is a matter of great concern. '
    ( By Kaniz Fatma )
  • if at all there is an historical perspective, then it can neither be eternal nor universal
    ( By hats off! )
  • even a deliberate, repeated and open act of blasphemy is not a crime. the inherent insecurity....
    ( By hats off! )
  • If Allah has placed Islam to have supremacism than other religions that do exercise their faith in him, why should Quran 85:11 permits.....
    ( By zuma )
  • Quran 65:3 mentions sufficiency is for those who believe in Allah: Chapter 65 Divorce سورة الطلاق - At-Talaq: ....
    ( By zuma )
  • Allah's love is not bias against those who believe in Allah yet join other religions: Chapter 3 The family of Imran سورة آل عمران - Aal-e-Imran: ...
    ( By zuma )
  • Does Allah love those terrorists who spread mischief in Syria to destroy houses, monuments and etc.? The extract below condemns. .
    ( By zuma )
  • Naseer sb. now raises a fake issue of the difference between supremacy and supremacism. He give an invented and ludicrous definition....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Naseer sb. continues to fight his bogeymen, falsely portraying me as an agent of profligacy! This is his deceptive way of....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Creeping medievalism" is a good phrase to describe the Muslim war on women.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Critical outlook surely needs to be cultivated. We should develop tolerance and accept new ideas.
    ( By Meera )
  • But later the revelation of 2:190 allowed fighting against those who had persecuted.
    ( By Naseer Ahmed )
  • GM sb selectively loses his capacity to distinguish between supremacy and supremacism. Not surprising because all that he is interested in, is ,....
    ( By Naseer Ahmed )
  • GM sb is wasting everybody's time injecting his third-rate gender politics into a discussion of a verse from the Quran. The hypocrite who argued in ...
    ( By Naseer Ahmed )
  • Quran supports all who believe in Allah and do righteous deeds are equal. The following is the extract:...
    ( By zuma )
  • Naseer sb. says, "The Quran being the last of the revelations and containing the complete and perfected religion....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • If you say that their actions are guided by the Light of God, that is good enough....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Naseer sb. is wasting our time talking about my comment that I neither denied nor have I any reason to pretend that I did not ...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Marriage with Non-Muslim for Halala Null And Void" Halala itself is not only null.. ..
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • A succinct and thoughtful analysis of what ails Pakistan.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )