certifired_img

Books and Documents

Urdu Section

یہ مدرسہ بورڈ ایکٹ کی چند دفعات ہیں، جن کو مختصر اً پیش کیا گیا ہے۔ ان کے مضمرات مدارس کی آزادی کو سلب کرنا ہے۔ ان  کے نصاب تعلیم کوبدلنا ہے اور نظام تعلیم کو مفلوج بنانا ہے۔ مدارس ہمارا دین ہیں ، ہماری دنیا نہیں ہیں۔ میں یہ بات باور کرانا چاہتا ہوں کہ مدرسہ اور مسجد کوئی بہت زیادہ فرق نہیں ہے۔ اگر مسجد میں نماز پڑھی جاتی ہے تو مدرسہ میں نماز پڑھنا سکھا یا جاتا ہے۔ اگر مسجد میں قرآن پڑھا یا جاتا ہے تو مدرسہ میں قرآن پڑھنا سکھایا جاتا ہے ۔ غرض مدرسہ وہ بنیادی جگہ ہے جہاں مسلمان کا رشتہ قرآن اور مسجد سے قائم ہوتا ہے۔....

 

امریکیوں نے گو انتانامو جیل میں تعینات اپنے فوجیوں پر پابندی عائد کی ہے کہ وہ مسلمان قیدیوں سے دور رہیں ،غیر ضروری گفتگو سے اجتناب کریں اور بالخصوص ان سے دوستی سے منع کیا گیا کیونکہ انہیں ڈر ہے کہ مسلمان قیدیوں سے دوستی کے نتیجے میں امریکی فوجی اسلام قبول نہ کرلیں۔گو انتا نامو جیل میں تعینات امریکی فوجی اسلام اور اس کے ماننے والوں کےدلوں سے اس کی محبت کم کرنے میں تو ناکام رہے مگر ا ن کا ایک فوجی اسلام تعلیمات سے متاثر ہوکر اور اپنے ساتھیوں کے اسلام کے بارے میں رویے سے متنفر ہوکر مسلمان ہوگیا۔...

 

ٹوئن ٹاورز کی تباہی پر پاکستان میں جن مذہبی جماعتوں اور دینی کارکنوں نے بھنگڑ سے ڈالے تھے وہ آج جی ایچ کیو کی ہائی جیکنگ پر ہننہنارہے ہیں۔پاک فوج اور حکومتی اداروں کا فریضہ ہے کے وہ جی ایچ کیو کیس کے ملزمان ،ان کے سرپرستوں ،انہیں اسلحہ پیسہ وگاڑیاں فراہم کرنے والے اعانت کنندوں اور ان کے بہی خواہوں پر ہنی ہاتھ ڈالیں ۔ماضی میں جہاں فوجی ڈاکٹیٹر وں نے تخت اسلام آباد کی حفاظت کے لئے مذہبی ونسلی جماعتوں کو لاجسٹک ومالی امداد کی وہاں جمہوری سرکاروں نے بھی انتہا پسندوں اور مذہبی جھتوں کو پایہ زنجیر کرنے سے اغماض برتا جس کے کئی بھیانک نتائج سامنے آئے۔ تازہ نتیجہ اور منظر جی ایچ کیو کیس کی شکل میں سامنے آیا ۔جس نے پوری قوم کو لرزا کر رکھ دیا ۔  روف عامر پپا بیار

 

A medieval state

Thank God, I am NOT a citizen of the Islamic state of Pakistan. Imagine if my parents had been enamoured of Jaswant Singh''s newfound hero Mohammad Ali Jinnah and migrated to the Islamic State of Pakistan. What a tragedy could have befallen my family and me! I could have either myself turned into a bigot or my kids could have taken up guns in the pursuit of a puritanical Islamic state like Saudi Arabia. I am extremely indebted to my parents for sticking to their roots in Allahabad and happily accepting the citizenship of ''Hindu India'' instead of saltanat-e-khudadad-e-Pakistan (godly kingdom of Pakistan). Ironically, there is nothing godly or saintly about Pakistan today. Pakistan could never become a modern republican state. So the state eventually withered away and got out of everyone''s control. There was a time not too long ago when the world believed that it was the Pakistan army whose writ ran the country. How naive was this understanding. -- Zafar Agha

مزید برآں جسونت سنگھ کے بعد ہندوستان میں سخت گیر ہندو نظریاتی تنظیم کےسابق سربراہ کے سودرشن نے بھی قائد اعظم محمد علی جناح کی تعریف کی ہے۔ سودرشن نے پریس کانفرنس میں کہاکہ جناح وطن پرست تھے ۔اگر مہاتما گاندھی نے تقسیم نہ ہونے پر زیادہ زور دیا ہوتا تو ہندوستان تقسیم نہ ہوتا ۔تاہم جب ان سے جسونت سنگھ کے بارے میں پوچھا گیاتو انہوں نے کہا کہ یہ بی جے پی کا اندرونی معاملہ ہے ۔سابق وزیر قانون اور ممتا زسیاست داں رام جیٹھ ملانی نے بھی کہا ہے کہ جسونت سنگھ نے جو بھی لکھا ہے وہ قابل تردید حقیقت ہے ،اگر کیبینٹ مشن پلان 1946آنے کے بعد نہرو ہٹ دھرمی کا مظاہرہ نہ کرتے اور سردار پٹیل ان کا ساتھ نہ دیتے تو برصغیر کا نقشہ آج کچھ اور ہوتا۔ ایم عارف حسین

 
کشمیر اور کشمیریت
اداریہ روزنامہ ہمارا سماج ،نئی دہلی

پاکستانی آرمی نے ہمارے ان علاقوں کو دہشت گردوں کے حوالے کررکھا ہے ، جس نے کشمیریت کو پروان چڑھانے میں اہم کردار ادا کیا تھا ۔ طرح طرح کے دہشت گرد عناصر اور ان کے خطرناک کیمپوں کے قیام کی وجہ سے نہ صرف پاک مقبوضہ کشمیر کا حسن داغدار ہوا ہے بلکہ روایتی طور پر جن عناصر ترکیبی کا مجموعہ اس خطے کو سمجھا جاتا تھا اس کا دور دور تک نام نشان نہیں ہے۔ پاک آرمی نے دراصل نہ صرف ہندوستان بلکہ دنیا کے ان تمام جمال پرستوں کے سامنے ایک خطرناک چیلنج پیش کیا ہے، جس کی پشت پناہی اب چین کرنے لگا ہے ۔....

 

ان دنوں پے درپے سیکورٹی فورسیز پر حملوں اور جی ایچ کیو پر قبضہ کرنے والوں کی ہلاکتیں بڑی کامیابیاں ہیں لیکن اتنی بڑی بھی نہیں کہ پوری زندگی انہی حسین تصورات میں گزاری جاسکے۔ اب آئندہ کے سخت مراحل درپیش ہیں۔ یہ درست ہے کہ فوج کے عزائم بلند ، ادارے مضبوط سوچ میں استحکام ہےلیکن جب وہ دہشت گردوں کی کمین گاہوں کو تباہ کرنے کا فریضہ سرانجام دے رہی ہوتو عو ام کے تمام طبقات کو اس کی پشت پناہی کرنی ہوگی۔یہ پشت پناہی ان تمام عناصر کے ذریعے ممکن ہے جو یا حکومت میں شامل ہیں یا آئندہ بننے والی حکومتوں کے امیدوار ہیں۔ ان سب کو ایک ساتھ رکھنے کی حکمت عملی اختیار کی جائے۔ ملک کے کسی حصے کو سوات اور مالا کنڈی کی طرح زیادہ دیر تک کسی تنظیم یا گروہ کے رحم وکرم پر چھوڑ نے کی حماقت نہ کی جائے۔  پروفیسر یاسین شیخ

مجوزہ مرکزی مدرسہ بورڈ کے تعلق سےایک الزام یہ بھی عائد کیا گیا ہے کہ یہ مدارس پر شکنجہ کسنے کے امریکی پلان کا حصہ ہے۔ ایک گروہ نے یہ بھی کہا کہ بورڈ کا خیال اڈوانی کےدماغ کی اپج ہے۔ مجھے ان الزامات کی تردید کرنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ لیکن میں اس سے بھی آگے بڑھ کر یہ کہتا ہوں کہ اگر یہ پلان امریکہ کے بجائے اسرائیل کا بھی ہواور اگر یہ خیال اڈوانی کے بجائے مودی اور توگڑیا کا بھی ہوتب بھی اس سے فائدہ اٹھانے میں حرج کیا ہے؟ پیمانہ یہ ہونا چاہئے کہ فائدہ عقیدہ کی قیمت پر نہ  ہو ۔....

 

گذشتہ ہفتہ جب ایک امریکی تحقیقی ادارے پیو (PEW)نے دنیا بھر کی مسلم آبادی کے اعداد وشمار جاری کئے تو اسے اخبارات میں نمایا ں جگہ ملی اور مسلمانوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ۔ظاہر ہے مسلمانوں کے لئے اس سے بڑھ کر خوشی کی بات اور کیا ہوسکتی ہے کہ وہ مذہبی طور پر عیسائیوں کے بعد اب دنیا کی دوسری بڑی آبادی بن گئے ہیں ۔امریکی تحقیقی ادارے کا کہنا ہے کہ عیسائیت کے بعد اسلام دنیا کا دوسرا سب سے بڑا مذہب ہے ۔دنیا میں عیسائیوں کی مجموعی آبادی 2ارب 10کروڑ سے زائد ہے۔  معصوم مراد آبادی

 

The opposition of Central Madrasa Board is needless. It is not in favour of Muslim community. This Board will obviously help in the development of Muslims. The present government is minority-favouring and they are trying to establish a greatly needed Board on the basis of Sachchar Committee recommendations. Unfortunately, that is being opposed by none other than the Muslims intellectuals and scholars of the country themselves. It will help our madrasa students to acquire Islamic and modern education, at the same time enabling them to reach to higher government posts. Sir Syed Ahmad Khan had founded Mohammedan Anglo-Oriental College in 1857 with the aim and ambition of the welfare of Muslim community. It is presently world-famous with the name Aligarh Muslim University for the great service it is doing for the welfare of the community. His effort too, was vehemently opposed at the initial stage by the then Islamic scholars and educationists. -- Mahmood Alam Siddiqui (Translated from Urdu by Raihan Nezami)

ہریانہ، ہندوستان اور اردو کے اس نامور فرزند کی ولادت 1837کو پانی پت کے محلّہ انصار یان میں ہوئی ۔ ان کے والد کا نام خواجہ ایزوبخش تھا۔ حالی کے جد اعلیٰ سلطان غیاث الدین بلبن کے عہد میں ایران سے ہندوستان آئے تھے ۔ مدت دراز تک یہ خاندان نہایت معزز ،مقبول اور خوشحال رہا۔ لیکن استداد زمانہ کے ہاتھوں حالی کے والدخواجہ ایز دبخش غربت وافلاس کی زندگی گزاررہے تھے۔حالی نے اسی تنگدستی اور ناداری کے ماحول میں آنکھ کھولی۔ ان کی پیدائش کے کچھ عرصہ بعد والدہ کا انتقال ہوگیا۔ جب وہ 9سال کے تھے والد بھی اس دنیا سے رخصت ہوگئے ۔ ان کی پرورش ان کے بڑے بھا ئی نے کی۔....

 

سرسیّد نے تعلیم پر اس لیے زیادہ زور دیا کہ انہیں اندازہ ہوگیا تھا کہ انگریزوں کو ہتھیار اور مادّی قوتوں سےشکست نہیں دی جاسکتی کیونکہ پوری دنیا میں مسلمان دھیرے دھیرے زوال کی طرف جارہے تھےاور یورپ نے 16ویں اور 17ویں صدی میں جو سائنسی برتری حاصل کی تھی اس کی زد میں دھیرے دھیرےسارے مسلمان ملک آرہے تھے ۔اسی لیے سرسیّد نے زیادہ زور جدید تعلیم پر دیا ان کو یہ بات سمجھ میں آگئی تھی کہ جدید تعلیم کے بغیرمسلمانوں کا مستقبل بالکل تاریک ہے۔سرسیّد کی دوربین نگاہوں نے دیکھ لیا تھا کہ زندگی نے جو رخ اختیار کرلیا ہے اس کو بدلا نہیں جاسکتا اس میں رکاوٹ پیدا کر کے اس کی رفتار کو بھی روکا نہیں جاسکتا بلکہ ایسا کرنے والے خود تباہ ہوکر رہ جائیں گے۔  ڈاکٹر شکیل صمدانی

سرسید احمد خاں 1817میں دہلی کے ایک معزز خاندان میں پیدا ہوئے ۔ آپ کے والد میر متقی اور والدہ بڑی نیک سیرت باہمت ،بااخلاق اور حوصلہ مند خاتون تھیں۔ آپ کی تعلیم وتربیت میں والدہ کا ہی سب سے بڑا حصہ ہے۔ انہوں نے آپ کو ایمانداری اور سچائی کی زندگی پر چلنے کا راستہ سکھایا۔ سرسید پڑھ لکھ کر 1838میں ایسٹ انڈیا کمپنی میں ملازم ہوگئے ۔ ان کی سچائی اور ایمانداری سےمثاثر ہوکر سرکار نے انعامات سے نوازہ اور ترقی کر کے جج بن گئے ۔ 1842میں بہادر شاہ ظفر نےسرسید کو ‘‘عارف جنگ جوالدولہ’’ کا خطاب عطا کیا ۔سرسید انگریز حکومت کے وفادار ہونے کے باوجود حق بات کہنے میں کبھی نہیں جھجکتے تھے ۔ انہوں نے انگریزوں کے خلاف سختی سے نکتہ چینی کی ہے۔....

آخر کیا وجہ ہے کہ کل تک اسلامی نظام کی بات کرنے والی یہ تنظیمیں بہت اچھی لگتی تھیں آج اچانک خراب لگنے لگیں ۔ جو کل تک روس، امریکہ اور اسرائیل کے خلاف اعلان جنگ کررہی تھیں آج وہی پاکستان اور ایران کے خلاف محاذ آرائی پراتر آئی ہیں۔مسلمانوں کا قتل عام کرکے ، مسلمانوں کو مار کر ، ان کے گھروں کو تباہ وبرباد کرکے، اپنی ہی بہن بیٹیوں کو بیوہ کر کے، اپنے ہی بچوں کو یتیم کرکے، آخر یہ کون سانظام مصطفیٰ نافذ کرنا چاہتے ۔ جس نظام میں سبھی لوگ لنگڑے ،لولے،اپاہج ،نابینا نظر آئیں گے۔....

 

مولانا رحمانی کے اس ا نقلابی اقدام نے  ہماری توجہ ایک اور حقیقت کی طرف بھی منعطف کرائی۔ مسلمانوں کی معاشی ، تعلیمی اور سماجی زندگی میں جس بہترین کی کوشش جنوبی ہندوستان میں کی جارہی ہیں ،شمالی ہندوستان میں ان کوششوں کا عشر عشیر بھی نظر نہیں آتا ۔ کیرل ،کرنانک، تمل ناڈو اور آندھرا کی غیر سیاسی مسلم تنظیمیں جوکام کررہی ہیں، شمالی ہندوستان میں بہت سے لوگوں کو ان کا علم بھی نہیں ہے۔ ایک تو شمالی ہندوستان میں غیر سیاسی مسلم تنظیمیں ہی عنقا ہیں اور جو ہیں بھی ،انہوں نے کوئی ایسا کارنامہ انجام نہیں دیا ہے ، جس کی مثال دی جاسکے ۔...

یونیورسٹی کا اقلیتی کردار عزیز ہے جائز بات ہے۔ علی گڑھ والوں کو مسلم یونیورسٹی میں مسلمانوں کی اکثریت برقرار رہنے کی فکر ہے صدفی صد اس کا حق ہے۔

لیکن ان خواہشات کی تکمیل کے لئے ہم اپنے علاوہ ہر دوسرے شخص کو ذمے دار سمجھتے ہیں ۔کبھی ہمیں حکومت سے شکایت ہوتی ہے کبھی ہمیں وائس چانسلر سے شکوہ ہوتا ہے ،کبھی ہم ملت کے اکابرین سے مطالبات کرتے ہیں ۔پھر الزام اور جوابی الزام کا سلسلہ شروع ہے۔ پھر گروپ بندیاں ہوتی ہیں، اخباری بیانات آتے ہیں، مقدمے بازی ہوتی ہے،یونیورسٹی بند ہوتی ہے ، پولس آتی ہے ، اخراج ہوتا ہے ، گرفتاریاں ہوتی ہیں، ہندی اور انگریزی اخبارات جم کر یونیورسٹی کو بدنام کرنےوالی خبریں ،مضامین اور رپورٹیں شائع کرتے ہیں ۔  جاوید حبیب

 

صاحبو! سندھ کی رواداری کے کیا کہنے ۔ہندو یہا ں کے جدی پشتی رہنے والے ’ بد ھ مت کے ماننے والے یہاں آباد’ فتح ایران کے بعد جان بچا کر بھاگنے والے آتش پرست جو پارسی کہلاتے ہیں ، یہاں ان کی اگیاریاں قائم ہوئیں اور ا نہیں پناہ ملی ۔انیسوی صدی میں قاچاریوں نے بہائیوں کے سروں میں میخیں ٹھونکیں اور ان کی کھالیں کھینچیں تو انہیں سندھ جائے امان نظر آیا ۔عیسائی یہا ں موجود ،ان کے کیسے شاندار گرجا گھر اپنی بہار دکھاتےہیں ۔ 20ویں صدی شروع ہوئی تو کراچی میں 2500یہودی رہتے تھے ۔تاجر ’ سول سرونٹ’ استاد اور ہنر مند ۔ ان کے لئے 1893میں مگین شلوم کے نام سے ایک سینی گاگ تعمیر ہوا۔ پاکستان بننے کے بعد یہاں یہودیوں کے خلاف جس طرح مہم شروع ہوئی اس کے بعد کراچی میں رہنے والے او رمراٹھی بولنے والے یہودیوں کے خلاف جس طرح مہم شروع ہوئی اس کے بعد کراچی میں رہنے والے اور مراٹھی بولنے والے یہودیوں نے ہندوستان ’ اسرائیل اور انگلستان کا رخ کیا۔    زاہدہ حنا

 

اطلاعات کے مطابق علی اشرف فاطمی ،سابق وزیر مملکت فروغ انسانی وسائل ،حکومت ہند کی پیش کردہ تجویز برائے تشکیل ‘‘مرکزی مدرسہ بورڈ’’ کے سلسلے میں جو کام شروع ہوا تھا،اس ‘مجوزہ بورڈ’ کے مسو دہ پرمسلم ممبران پارلیمنٹ اس وقت نظر ثانی کررہے ہیں۔ ترمیم واصلاح ودیگر ضروری کارروائیوں کے بعد اگر بورڈ کا بل پارلیمنٹ میں پیش اور ممبران پارلیمنٹ کے بحث ومباحثہ کے بعد پاس ہوجاتا ہے تو یہ بورڈ سی بی ایس سی کے مساوی ایک نصاب تیار کرے گا جس کا امتحان دے کر مدارس کے طلبہ ہائی اسکول اور انٹر کے مساوی سند حاصل کرسکیں گے ۔...

مسلمان مجموعی طور پر اس حرکت کی ضرورت یا اہمیت سے مطمئن نہیں ہیں۔ وہ جو سب سے پہلا سوال اٹھاتے ہیں وہ یہ ہے کہ آخر حکومت تمام مدرسوں کو کسی ایک مرکزی انتظامیہ کے تحت لانے کے لئے کیوں بے چین ہے، حالانکہ وہ اچھی طرح جانتی ہے کہ اس طرح کا کوئی سنٹرل بورڈ سنسکرت پاٹھ شالاؤں کے لئے موجود نہیں ہے، جن کی تعداد مدرسوں کی تعداد سے کہیں زیادہ ہے۔...

آپ کا نام نجیب الدین ہے اور آپ کا لقب متوکل ہے۔ آپ کے لقب کی وجہ یہ بتائی جاتی ہے کہ آپ صرف اور صرف اللہ پر توکل کرتے تھے حالانکہ اہل وعیال ساتھ تھے لیکن زندگی بھر کبھی کسی کے سامنے ہاتھ نہیں پھیلایا ۔ آپ صاحب دل ،صاحب کشف وکرامات تھے، آپ کا توکل مثالی تھا اورکیوں نہ ہوتا آپ حضرت بابا فرید گنج شکرؒ جیسے عظیم المرتبت بزرگ کے حقیقی چھوٹے بھائی ،مرید اور خلیق تھے۔ حضرت نجیب الدین متوکل ؒ اپنے بڑے بھائی حضرت بابا فرید گنج شکرؒ کے ہمراہ دہلی آئے تھے جب حضرت بابا فرید قدس سرہ پاک پٹن شریف گئے تو انہوں نے اپنے بھائی حضرت نجیب الدین متوکل ؒ کو دہلی میں ہی رہنے کی ہدایت دی۔ ....

 

حقیقت یہ ہے کہ مسلمانوں کی طرف سے حکومتوں کے مسلسل تغافل ،مدارس عربیہ کے کردار اور خدمات کو نظر انداز کرنے کی لگاتار کوشش بلکہ ان پر بنیاد پرستی، تنگ نظری اور دہشت گردی جیسے الزامات لگانے کی مسلسل مہم نے اس منصوبے کی افادیت ختم کردی ہے، آج ہر طرف سے یہ سوال کیا جارہا ہے کہ آخر حکومت کو ساٹھ سال کے بعد مدارس کی حالت سدھار نے کا خیال کیسے آگیا ،مسلمانوں کا یہ شک اپنی جگہ بالکل صحیح ہے کہ حکومت مدارس کے بڑھتے ہوئے اثرات سے خوف زدہ ہے اور وہ ان کے فعال کردار کو محدود کرنا چاہتی ہے او ریہ کام اسی طرح ممکن ہے کہ انہیں مدرسہ بورڈ کی بھول بھولیوں میں الجھا دیا جائے۔....

 

وہ شخص بڑا خوش نصیب ہے جسے اسلام کے اس اہم رکن کی ادائیگی کی سعادت حاصل ہو اور اس سے بھی زیادہ خوش نصیب وہ شخص ہے جو اس عبادت کو محض دنیاوی نام ونمود کے لئے ادا نہ کرے بلکہ اس کا مقصد فرض کی ادائیگی کے ساتھ ساتھ حج کی برکتوں ،سعادتوں اور رحمتوں کا حصول بھی ہوا اور وہ اس فرض کی تکمیل اس طرح کرے کہ اس کا حج، حج مبروربن جائے، جس کی بڑی فضیلت وارد ہے، حدیث شریف میں ہے کہ سرکار دوعالم ﷺ نے ارشاد فرمایا : الحج المبرور لیس لہ جزا الا لجنۃ (صحیح البخاری :2/629، رقم الحدیث :1683)‘‘ حج مبرو رکا ثواب صرف جنت ہے’’ ۔....

 

رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: وہ شخص جھوٹا نہیں ہے جو لوگوں کے درمیان صلح وصفائی کراتا، بھلائی کی بات کہتا اور ایک دوسرے کو اچھی باتیں پہنچاتا ہے۔ (اگرچہ وہ صلح وصفائی کی نیت سے جھوٹ سے کام لے)امیر المومنین خلیفہ ثانی حضرت عمر فاروقؓ نے اپنے قاضیوں کے لئے یہ فرمان جاری فرمایا: رشتے داروں کے مقدمات کو انہی میں واپس لوٹا دیا کرو تاکہ وہ خود برادری کی امداد سے آپس میں صلح کی صورت نکال لیں ۔فقہاء نے لکھا ہے کہ اگر چہ فاروق اعظمؓ کے فرمان میں یہ حکم رشتے داروں کے باہمی جھگڑوں سے متعلق ہے مگر اس میں حکمت مذکورہ ہے کہ عام ہے، باہمی کدورت اور عداوت سے سب ہی مسلمانوں کو بچانا ہے، اس لئے حکام اور قضاۃ کے لئے مناسب یہ ہے کہ مقدمات کی سماعت سے پہلے اس کی کوشش کرلیا کریں کہ کسی صورت سے فریقین کی آپس میں رضا مندی کے ساتھ مصالحت ہوجائے ۔ (بحوالہ معارف القرآن ،مفتی محمد شفیع)۔    محمد ابراہیم خلیل

 

ایک طرف دونوں حکومتوں کا یہ جنگ جو یا نہ رویہ ہے ،دوسری طرف دونوں حکومتوں نے اپنے عوام کی فلاح وبہبود کو یکسر فراموش کررکھا ہے۔ نتیجے میں دونوں طرف کے شہری بیروزگار ی ، بے تحاشہ بڑھتی ہوئی آبادی ،جہالت، ظلم اور ناانصافی کی دلدل میں دھنستے چلے جارہے ہیں ۔ دونوں طرف مذہب کے نام پر سیاست کرنے والی جماعتوں اور طاقت کے سرچشمے پر قابض عناصر نے عوام کے شعور میں اضافے کی بجائے انہیں کچھ زیادہ تنگ دل ، تنگ نظر اور جنگی جنون کا ایندھن بنادیا ہے۔    زاہدہ حنا

 

Presently, the question is not about whether madrasas are encouraging terrorism or not?  The question of great concern is why madrasa officials are afraid and not interested in affiliation with a central Board. Some of them are talking about the danger of increasing corruption; in fact, they are afraid of losing their hold of proprietorship, status and authority as they will have to follow a code of conduct and certain terms and conditions. The corruption prevalent in the payment of teachers’ salary and the manner of imparting education will be exposed. The proposal of madrasa board may also expose the dishonesty of our Islamic scholars. This makes the prospect of reform very bleak as the ruling political parties are helpless before them and cannot afford their displeasure and annoyance. -- Tahir Khaleel. (Translated from Urdu by Raihan Nezami)

 

 


Get New Age Islam in Your Inbox
E-mail:
Most Popular Articles
Videos

The Reality of Pakistani Propaganda of Ghazwa e Hind and Composite Culture of IndiaPLAY 

Global Terrorism and Islam; M J Akbar provides The Indian PerspectivePLAY 

Shaukat Kashmiri speaks to New Age Islam TV on impact of Sufi IslamPLAY 

Petrodollar Islam, Salafi Islam, Wahhabi Islam in Pakistani SocietyPLAY 

Dr. Muhammad Hanif Khan Shastri Speaks on Unity of God in Islam and HinduismPLAY 

Indian Muslims Oppose Wahhabi Extremism: A NewAgeIslam TV Report- 8PLAY 

NewAgeIslam, Editor Sultan Shahin speaks on the Taliban and radical IslamPLAY 

Reality of Islamic Terrorism or Extremism by Dr. Tahirul QadriPLAY 

Sultan Shahin, Editor, NewAgeIslam speaks at UNHRC: Islam and Religious MinoritiesPLAY 

NEW COMMENTS

  • Now Hats Off rushes to support those who are claiming that aeroplanes (which could even fly backwards), space travel and plastic surgery existed in ...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Even the worst of the Islamophobes do not lay the sins of jehadi terrorists at our doors but Hats Off, being without any shame, ...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • I fully agree with Rafia Zakaria.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Hats Off will find one way or another to say something bad about Muslims, irrespective of what subject is being discussed!
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Hats Off's next smart-aleck comment will be that a perfect human being cannot possibly be a Muslim!
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Mixing religion with science is a dubious exercise, and is so unnecessary.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • plz dont mix religion with science the description of hell and heaven are symbolic only ALLAH knows the best.we have to be righteous and ...
    ( By amir )
  • Words never end.
    ( By Rumish )
  • why is it that every "perfect" human being happens to be a muslim?is something wrong with people?
    ( By hats off! )
  • kaniz fatma is either absolutely innocent or totally uninformed.let this person find out what is happening with the ahmadiyas in pakistan. or in any ...
    ( By hats off! )
  • Undoubtedly Maulana Rumi is a Perfect Source of Inspiration In Terms Of Social Development and Solution to Universal Problems. 
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • Let us say bye to every conspiracy theory and make a healthy environment for peaceful coexistence. Love can win the hearts but hate wins nothing ...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • Indonesian women blaming the government for sexual harassment are right in their initiative.With the legal protection becoming weak, the incidents of sexual harassment will ...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • "the renewal of religious discourse should consider the requirements of the current age and place as well, saying that the “early scientists succeeded to ...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • Bilal A. Sultan writes, "I am pakistani live in 28 chak Bangla Colony, Tehsil Malakwal, District Mandi Bahauddin." Here we have more Hindu Population than ...
    ( By Kaniz Fatma )
  • @Miss Kaniz Fatmaاگر کسی نے یہ عقیدہ رکھا کہ اللہ تعالی کسی چیز کا محتاج نہیں مگر وہ یہ کہتا ہے کہ اللہ تعالی نے ...
    ( By Abdullah )
  • Non-Muslims have no place in the heart of Muslims and in the land where Muslims are in a majority.
    ( By dr.A.Anburaj )
  • Hello Madam, Hindus in Pakistan and Bangaladesh are  suffering Genocide at the hands of Islamic Governments and "Kill  Khafir"Public. Have you any word for ...
    ( By dr.A.Anburaj )
  • the decimal system was appropriated by the marauding bedouins from the idol-worshiping hindu polytheists.lying is the main vocation of the soft islamists aka "moderate" muslims.
    ( By hats off! )
  • Please excuse me there is no science in Quran. Arab imperialism ,  social living and spirituality is what Quran is made for. We need ...
    ( By dr.A.Anburaj )
  • historical evidence shows that the prophet (pubh) banned the polytheists and jews from the hejaz.so the buddhists in myanmar are just emulating the prophet.
    ( By hats off! )
  • there is also reference to SNP and quantum entanglement. but it does not have any reference to bird's eye chili or garbanzo beans.maybe allah ...
    ( By hats off! )
  • an ISIS terrorist describes himself as a true muslim. you are the supreme mis-leader.or is it the case that ISIS are rastafarians? you should ...
    ( By hats off! )
  • صحیح بخاری و صحیح مسلم میں  ابوہریرہ و ابو سعید رضی اﷲ تعالیٰ عنہما سے مروی، حضور اقدس صلی اﷲ تعالیٰ علیہ وسلم فرماتے ہیں : ’’مسلمان کو ...
    ( By Kaniz Fatma )
  • Feeling compassion for the most persecuted minorities of Burma - the Rohingyas is really an act of humanity.They that are oppressing these minorities are ...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • If some have done wrong, it does not mean all are responsible for that. Wrongdoers have become king of this age and innocent civilians are ...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • I do not have any fixed strategy. The end result of hat Prof. Moosa says and what I say would be the same. Can you ...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Naseer Ahmad Sahab, Assalam alaikum, Please answer this question. I need it. "Did Akbar become so secular because it was best for expansion of his kingdom?"
    ( By Kaniz Fatma )
  • Mr. Uvais Cassim, from Sri Lanka, writes, “Real education began when the world’s first degree awarding University was founded by an Arab Muslim woman named Fathima al ...
    ( By Kaniz Fatma )
  • An ISIS terrorist on the rampage in Strasbourg, France  does not make your case for muted Christmas celebrations. A better explanation would be the ...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Why is it not fine to make division between religious and secular education?
    ( By Huzaifa )
  • @TalhaThe founding editor of newageislam.com Mr. Sultan Shahin deals with this subject at some length.  You can find your answer here; If Not the UN Charter, Muslim Countries Should At ...
    ( By Kaniz Fatma )
  • Good to hear that Malaysia would ratify all remaining core UN instruments related to the protection of human rights, including the International Convention on the ...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • A person asked me: Should Muslims follow Islam or UN charter in this time when this religion is being distorted by a group of ...
    ( By Talha )
  • Nice to see a good comment from Hats Off.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Right to privilege? Right to oppress? Shameful! 
    ( By Naseer Ahmed )
  • The situation can only change if the Muslims establish a good reputation for themselves as tenants and neighbours. The situation described is shameful for ...
    ( By Naseer Ahmed )
  • Why do you quote Prof Moosa when your strategy is different from his? You want to leave the Quran aside and even insist and maintain that:   1.     The ...
    ( By Naseer Ahmed )
  • ever heard of strasbourg? soon you will.
    ( By hats off! )
  • “If Islam is disturbed, if the [Malay] race is disturbed, if our rights are disturbed, then we will rise to defend our rights,”what a ...
    ( By hats off! )