certifired_img

Books and Documents

Urdu Section

اب پیپلز پارٹی دوبارہ اقتدار میں آچکی ہے۔یقیناً سپریم کورٹ کو بھی چائے کہ اس مقدمے کو انجام تک پہنچائے لیکن سپریم کورٹ میں صرف 17جج ہیں اور یہ 17جج اگر اس معاملے کو دوبارہ کھولیں گے تو فیصلے تک پہنچنے میں کافی دن لگیں گے ۔ اس دوران پارلیمنٹ کو بھی کچھ کرنا چاہئے۔ پارلیمنٹ کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نیب کے حکام کو بلائے اور ان سے پوچھے کہ انہوں نے 1999سے 2009تک آئی ایس آئی کے فنڈ میں مختلف سیاستدانوں ،جرنیلوں اور صحافیوں میں بانٹے گئے 14کروڑ روپے کا کوئی حساب لیا یا نہیں ؟ آج بھی اس مقدمے سے متعلق بہت سا ریکارڈ نصیر اللہ بابر کے پاس محفوظ ہے۔ حامد میر

 

جس طرح شوہر کے اقارب باعث رنجش شوہر و زوجہ بنتے ہیں اسی طرح زوجہ کے والدین بھی طرح طرح کی رنجشوں کے باعث ہوجاتے ہیں خصوصاً زوجہ کی والدہ یا بڑی بہن عموماً یہ چاہتی ہیں کہ ان کی بیٹی یا بہن حد سے زیادہ گرویدہ اپنے شوہر کی نہ ہوجائے۔ وہ ہمیشہ یہ نصیحت کرتی ہیں کہ شوہر پر اپنا دباؤ رکھو تاکہ تمہاری قدر شوہر کے دل میں زیادہ ہو۔ بیوی کا یوں کھنچنا کبھی کبھی شوہر کی طبعیت کی اصلاح کردیتا ہے مگر بعض صورتوں میں سخت مضر بھی ہوتا ہے۔ جب کسی لڑکی کو نیک نہاد شوہر مل جاتا ہے اور پوری محبت کرتا ہے اور اپنی بیوی کو نہایت آرام سے رکھتا ہے تو وہ ضرور متوقع اس کا امر کارہتا ہے کہ وہ بھی اس کے ساتھ پوری محبت کرے گی اور اس کے آرام کو اپنا آرام سمجھے گی۔....

 

زمانہ بھر میں اگر کوئی ان کا شاکی ہے تو ان کی بیوی ایک ہمارےنہایت فاضل دوست ہیں جو بحر علوم  عربیہ میں شنا دری کرنے والے اور نہایت خوش مذاق خوش خیال شخص ہیں جن کی ذات گروہ علما میں منعتنمات سے ہے مگر ہم طریق زندگی نے ان کو کسی کام کانہیں رکھا ۔ان کے بے انتہا علم سے ایک ذرہ کی برابر فیض کسی کو نہیں پہنچتا ۔ ہم تو جب کبھی ان کی خدمت میں حاضر ہوئے ہیں تو یہ سنا کہ مولوی صاحب بیڑھا ٹھوک رہے ہیں۔یاچار پائی کی ادوائن کس رہے ہیں۔ یا پسناری کو گیہوں تول کر دے رہے ہیں۔یابچوں کی آبد ست کررہے ہیں ۔ پس جس شخص کو اس قسم کی خانہ داری نصیب ہو اس کو کیا راحت نصیب ہوسکتی ہے۔ بعض لوگوں کو ایسی بیویاں ملتی ہیں جو اچھی پڑھی لکھی ہیں۔....

 

ذرا دھیان سے تصور کرو ایک بے زبان کی کیفیت قلبی کا ۔ جب ایک جفا کا ر کسی کسی کو اپنی بیٹھک میں بلاتا ہے اور اپنی ولفگار رفیق سے اس کے لئے کھانا پکواتا ہے اور اپنا منہ اور عاقبت سیاہ کرتاہے اور وہ اشرف زادی اس حرامکاری کی جابرانہ اور کافر انہ حکموں کی تعمیل کررہی ہے۔ آنسو کی لڑی اس کی آنکھوں سےجاری ہے اور وہ اس بیدرو سفاک کے خون سے جلدی جلدی اپنی آنکھیں پونچھتی ہے کہ وہ کہیں دیکھ نہ لے اور ایسا ظاہر کرنا چاہتی ہے کہ چولہے کے دھویں سے آنکھوں سے آنسو نکلے ہیں ۔ ارے ظالم اس لڑکی کی آہیں نہیں ہیں جلے بھنسے دل کادھواں آنسو نہیں ہے ۔جگر پانی ہوکر آنکھوں کے راستہ سے بہ رہا ہے۔....

 

رخصت کے وقت دولہن کے ہمراہ اس سے عزیزوں میں سے کسی مرد اور کسی قدرعورتوں کا جانا موجب ا سکے آرام وسہولت و اطمینان کا ہے۔ سسرال میں پہنچ کر دولہن کا کمال حیا وشرمگیں نگاہ کے ساتھ اتر نا اور معتدل رفتار کے ساتھ چلنا اور سب سے ملنا اور مودبانہ پیش آنا ۔ہر سوال کا معقول مختصر جواب دینا آدمیت کی باتیں ہیں ، نہ اندھا بھینسا بن جانا۔ دوسروں کے چلائے چلنا اور دوسروں کے اٹھائے اٹھنا ۔دولہن کے پاس ہر وقت بھیر کا رہنا بھی خوب نہیں بلکہ بیبیوں سے ملا نے کا ایک وقت خاص چاہئے ۔.....

 

منگنی کے ایام میں لڑکی اور لڑکے کے اقربا میں جو خط وکتابت ہووہ ضرور ہے کہ سچے اخلاص او رمحبت سے پر اور یگانگت  کے رنگ سے رنگین ہو ہمارے ہاں منگنی کے ایام میں جس قسم کی خط وکتابت ہوتی ہے ہم اس کو سخت ناشائستہ تصور کرتے ہیں یہ صحیح ہے کہ منگنی سے پہلے دونوں خاندان ایک دوسرے کے حال کی تفتیش بہت چھان بین کے ساتھ کرتے ہیں لیکن جب وہ مرحلہ طے ہوچکے اور یگا نگت قائم ہوجائےتو ایک دوسرے کی عیب جوئی ۔ یا چھوٹائی بڑائی کا فرق تو بڑی بات ہے۔...

 

نکاح کے متعلق ایک اور اصلاح بھی ضروری اور بہت مفید معلوم ہوتی ہے حال کے دستور کے موافق والدین اپنی بیٹی کو جہیز میں بہت سی پتیلیاں اور لوٹے اور چمچے اور کٹورے اور بہت سی خاک بلادیتے ہیں ۔بعض والدین نہ صرف برتنوں پر اکتفا کرتے ہیں بلکہ بیت الخلا کا سامان بھی مثلا چوکی طشت وغیرہ بھی دیتے ہیں ۔ اسی طرح وہ بے شمار کپڑوں کے جوڑے سلے سلائے جن میں پاجامے ،کرتیاں دوپٹے  وغیرہ سب کچھ ہوتے ہیں کئی سال کا سامان پہلے سے تیار کردیتے ہیں اور جس طرح برتنوں میں چوکی اور طشت تک نوبت پہنچتی ہے ان میں رومال ۔کمر بند ۔موباف بٹوے ۔تلے دانیوں اور کنگھی تک نوبت پہنچتی ہے ۔....

 

حضرت عمر فاروق ۔عمر بن العاص ۔طاؤس ۔اوب الشعشا ۔ امام شافعی ۔ امام احمد ۔ اوزاعی۔ اسحاق وغیرہ ائمہ حدیث ۔امام احمد کا مذہب یہ ہے کہ اگر شوہر زوجہ سے یہ شرط کرلے کہ میں تیرے ہوتے نکاح ثانی نہ کرونگا تو اس شرط کا ایفا ضروری ہے اگر یہ شرط پوری نہ ہوگی تو نکاح ٹوٹ جائے گا۔ ایک اور حدیث میں آیا ہے کہ  لایحل ان تنکح امراۃ بطلاق اخری ۔یعنی اس طرح کا نکاح جائز نہیں کہ ایک عورت یہ شرط کرے کہ اگر تو اپنی پہلی بیوی کو طلاق دے دیں تب میں نکاح کرتی ہوں۔....

 

قبل ازمنظوری رشتہ لڑکی والوں کو چاہئے کہ لڑکے کےذریعہ معاش کی بابت قطعی یقین حاصل کرلیں ۔ آج کل فی زمانہ ذرائع معاش بہت محدود ہوگئے ہیں اور ماں باپ صرف اپنا چاؤ پورا کرنے کےلئے قرض لے کر شادیاں کردیتے ہیں۔ چونکہ لڑکا کوئی مستقل صورت گذارہ نہیں رکھتا اس لئے کئی طرح کی خرابیاں ظہور میں آتی ہیں۔ اور بیاہ کی خوشیاں چند روز میں ختم ہوجاتی ہیں اور دولہن پرانی ہوجاتی ہے ۔ اور کنبہ میں ایک آدمی کا خرچ بڑھ جانے کی وجہ سے یہ بوجھ صاف محسوس ہونے لگتا ہے جو بالطیع ناگوار ہوتا ہے ۔لڑکے کا بیکار رہنا جو پہلے والدین کے دل پر چنداں بارنہ تھا اب  خاص طور پر موثر ہوکر بیٹے اور بہو سے نامعلوم  نفرت پیدا کرنے لگتا ہے ۔.....

 

لیکن سب سے سخت مشکل یہ ہے کہ اگر اس قسم کا پورا اختیار عورت کو دے بھی دیا جائے تو وہ بیچاری ایک شخص کو کس طرح اچھا یا برا کہہ سکتی ہے جب کہ اس نے اس کو دیکھا تک نہیں اس کی عادات و اطوار سے واقفیت حاصل نہیں کی ۔ وہ نہیں جانتی کہ اس کی خوسبو کیسی ہے اور وہ اس کے ہمراہ کس قسم کا سلوک کرے گا۔ پس عورت کو اختیار ملنے کی صورت میں بھی فقط اس مختصر امر کی بنا پر کہ فلاح شخص فلانے کا بیٹا ہے اور اس عمر کا ہے وہ زندگی بھر کے معاملات پیچیدہ کے لئے اس کو کس طرح منتخب کرسکتی ہے۔....

 

طبقہ شرفا میں جو بالغہ اور قابل ازدواج لڑکیوں کو بیاہ شادیوں کی تقریبوں میں نہ لے جانے کا عام دستور ہے اس کو بند کر کے ان کو اپنی بہو اور ماؤں کے ہمراہ ان تقریبات میں شامل ہونے کی اجازت دی جائے۔اس سے تین فائدہ ہونگے اول یہ کہ کنبہ اور برادری کی عورتیں اس لڑکی کو دیکھ کر اور بات چیت کرکے اس کی صورت و سیرت کی نسبت ٹھیک رائے قائم کرسکیں گی اور جس لڑکے سے اس کا رشتہ قرار پائے اسکو اس لڑکی کے حالات زیادہ وضاحت اور صحت اور وثوق سے معلوم ہوسکیں گے۔...

 

ابن عمر کہتے ہیں کہ عثمان ابن مظعون مرگیا اور اس نے ایک بیٹی چھوڑی اور اس کے نکاح کی بابت اپنے بھائی قدامہ کو اخیا%ر دیا ۔عثمان اور قدامہ دونوں ابن عمر کے ماموں تھے۔ ابن عمر  نے قدامہ سے اس کی بھتیجی کےلئے خواستگاری کی چنانچہ اس نے اس لڑکی کا نکاح ابن عمر سے کردیا۔ اس کے بعد مغیرہ ابن شعبہ لڑکی کی ماں کے پاس گیا ۔ اور مال کا لالچ دیا چنانچہ ماں کی رائے پھر گئی او رماں کے ساتھ لڑکی کی بھی ۔آخر دونوں نکاح سے منکر گئے ۔ یہ معاملہ رسول اللہ کے پاس پہنچا ۔قدامہ نے کہا کہ یہ لڑکی میری بھتیجی ہے اس کے باپ نے وصیت کی تھی کہ میں اس کا نکاح کردوں سو میں نے اس کا نکاح اس کے پھوپھی زاد بھائی ابن عمر سے کردیا۔...

 

ہزاروں شریف نوجوان ملیں گے جن کی بیویاں نہایت حسین اور تعلیم یافتہ اور سلیقہ مند ہیں اور اپنے شوہر وں کی اطاعت اور فرمانبرداری اور انتظام خانہ داری سب کچھ کمال خوش سلیقگی سے کرتی ہیں مگر ہم ان نوجوانوں کو آوارہ اور فسق وفجور میں مبتلا پاتے ہیں اس کی وجہ بجز اس کے او رکچھ نہیں ہوتی کہ تعلیم اور تربیت اور نیک صحبت نے جو کچھ فرائض زوجیت لڑکیوں کو سکھائے ان سب پروہ لڑکیاں پورا عمل کرتی ہیں اور جتنے اختیاری امور ہیں ان میں وہ اپنے شوہروں پر ملال نہیں آنے دیتیں مگر سچا اخلاص اور پیار جس سے وہ حالت پیدا ہوتی ہے کہ من توشدم تو من شدی من تن شدم تو جاں شدی اس پر تعلیم وتربیت کی حکومت نہیں ۔...

 

غرض نکاح کے جو اصلی اغراض ومقاصد تھے وہ لوگوں کے دلوں سے مٹ گئے اور ان کی جگہ لوگوں کے دلوں میں جھوٹے اصول او رکمینہ خواہش متمکن ہوگئی ہیں۔ اس لئے ان اغراض و مقاصد کی تکمیل کے جو طریقے تھے ان کی پیروی کی بھی کچھ ضرورت نہ رہی اور لوگ نکاح کے باب میں بالکل غلط راہوں پر پڑگئے اور گمراہ ہوگئے اور اس گمراہی سے جو خرابیاں پیدا ہونی ضرور تھیں وہ پیدا ہورہی ہیں۔ ہر ایک گھر میں نااتفاق اور بغض او ر لڑائی جھگڑے کا بیج بویا گیا ہے جو اپنا قدرتی پھل لارہا ہے اور لائےگا ۔ ان جھگڑوں سے ہزاروں شریفوں کے گھرانے جو حقیقی راحت و شادمانی کی تصویر ہوتے او ربے انتہا محبت وخوشی کے مرجع بنتے بدترین کدورتوں او ر دل آزاریوں کے نمونے ٹھہرے ہیں۔....

 

ایک قصہ ہمیں ہمیشہ یادرہے گاکہ کسی نے ہمارے آگے اپنی بیوی کی بہت تعریف کی اور خدا کا بہت شکر ادا کیا کہ اسی بیوی اس کو عطا فرمائی ۔ہمیں اس کی بیوی کے اوصاف سننے کا شوق ہوا۔ اس نے کہا کہ بس وصف کیا بیان کروں۔ خداجانے آپ کی کیا رائے ہے۔مگر میری رائے میں تو اس میں ایک وصف تمام جہاں کی نعمتوں سے بڑھ کر ہے۔ میں نے کہا کہ آخر فرمائیے تو سہی ۔ اس نے کہا شاید آپ یوں ہی ہنسی میں اڑائیں میں ہرگز بیان نہ کروں گا۔مجھے اس بات کی کچھ پروا نہیں کہ اس وصف کی کوئی اور شخص بھی داد دے۔غرض جب ہم نے بہت اصرار کیا تو یہ معلوم ہواکہ ان کی بیوی دونوں آنکھوں سے اندھی ہے اور باوجود اندھی ہونے کے روٹی وغیرہ کا کام اچھی طرح انجام دے لیتی ہے۔...

 

ایک ہمارے دوست حسین بیوی رکھتے تھے ۔ اس بیچاری کے ہاتھ کی پشت پر رسولی نکل آئی اور ضروری ہوا کہ ہاتھ ڈاکٹروں کو دکھایا جائے۔ ہمارے دوست کو اس قدر فکر رسولی کے مرض کا نہ تھا جس قدر یہ فکر تھا کہ ان کی بیوی کے حسین ہاتھ پر ڈاکٹر کی نظر پڑے گی۔ ہم نے ان کو اس فکر میں غلطیاں وہ پیچا ں پاکر ان کو یہ تجویز بتائی کہ مقام ماؤف کے سوا باقی کل ہاتھ پہونچے تک نیل یا سیا ہی میں رنگ دیا جائے ۔مگر ہمارے دوست نے اس کو تمسخر سمجھ کربہت برامانا ۔ سینہ کے امراض مثلاً دق یا سل میں جو عموماً مستورات کو زیادہ ہوتے ہیں مہلک ہیں اور سینہ کا امتحان ایک امر لابد ہے جس کو بہت ہی کم شرفا کم گوارا کرتےہیں۔....

 

جن شرائط پر دوسرے مقصد کا حصول ہے وہ بھی نکاح مروجہ میں کلی طور پر مفقود ہوتی ہیں اول تو شوہر کو زوجہ کے پسند کرنے کا اختیار ہی نہیں ہو تا اور اگر ہوتا بھی ہے تو دس بارہ برس کا بچہ کیا جان سکتا ہے کہ میں کس قسم کا اور کتنی مدت کےلئے معاہدہ کرتاہوں اور اس کا کیا اثر میری کل زندگی پر ہوگا  لیکن اس قدر صغر سنی میں نکاح ہونا ایسا صریحا مذموم امر ہے کہ اس کی مذمت سے عموماً لوگ واقف ہوگئے ہیں اس لئے اس امر پر زیادہ زور دینا ضروری ہے ۔ لیکن جو نکاح عموماً زمانہ بلوغت یا اس سے بھی بعد عمل میں آتے ہیں ان کے پسندیدہ ہونے میں شاید بہت کم لوگوں کو کلام ہوگا ۔مگر ہم ان نکاحوں کو بھی سخت قابل اعتراض سمجھتے ہیں۔....

 

نکاح مرد اور عورت کی زندگی میں ایک بڑا بھاری انقلاب ہے اور متاہلانہ زندگی بالکل ایک عجیب نئی قسم کی زندگی ہے جس کی نسبت کسی طرح کا قیاس اس قسم کی زندگی کا تجربہ کئے بغیر حاصل نہیں ہوسکتا ۔ عورت اور مرد کے پیدا ہونے کی جو علت غائی ہے اس کا حصول نکا ح سے ہوتا ہے۔ سب جانتے ہیں کہ وہ علت غائی حفظ نوع ہے۔ انسان کے سوا جس قد آور حیوانات ہیں ان میں بھی نر او رمادہ کا  پیدا کیا جانا بقائے نسل کے لئے ہے مگر ان میں اور انسان میں جس کا عقل وتمیز سے مشرف کیا گیا ہے ایک یہ فرق عظیم ہےکہ دیگر حیوانا ت کے بچے پیدا ہوکر ایسے بے بس اور والدین کی مدد کے محتاج اور محض بے بس اور حیوانات سے بھی کم عقل ہوتا ہے ۔....

 

پس جب ان غریبوں ادنیٰ گھروں کی عورتیں باوجود بے علمی او ربے استطاعتی کے اپنی عصمت کو اس طرح بچاسکتی ہیں تو کیا یہ شریف زادیوں ہی کےلئے خاص بات ہے کہ وہ باوجود تعلیم یافتہ ہونے کے اور نیز اس امر کے کہ ان کےلئے ترغیبات اس قدر موثر نہیں ہوسکتیں جس قدر غربا کی مستورات کے لئے اور نیز باوجود اس امر کے کہ شرفا کی عورتوں کو جن کو نوکر چاکر رکھنے کا مقدور ہےبازاروں میں پھرنے کی ضرورت نہ ہوئی تاہم وہ نسق میں مبتلا ہوئے بغیر نہ رہیں گی۔ ہم اپنی قوم کے معزز گھرانوں کی بیگمات کے اطوار واوضاع کی نسبت نہایت اعلیٰ رائے رکھتے ہیں جو ہم کو ایسے ناپاک خطروں سےمانع ہے۔....

 

انسان کے دماغ اور دل کی پر حکمت ساخت سے جس میں ہزاروں قابلیتیں کسب علوم وفنون کی مخفی رکھی گئی ہیں اس صانع ازلی وحکیم لم یزلی کی بے انتہا دانش کا ناقابل بیان اثر انسان کے دل پر پیدا ہوتا ہے ۔ ان قابلیتوں نے مصنفوں ۔صنا عون اورحکیموں کے وجود میں دنیا کو کیا کیا کمالات دکھلائے اور فائدے پہنچائے ہیں۔ کیا کوئی کہہ سکتا ہے کہ قسام ازل کی طرف سےعورتوں کو ان قابلیتوں کا حصہ مردوں سے کچھ کم ملا ہے ۔ ہرگز نہیں مگر اس خلاف شرع پردہ نے اللہ کی آدھی حکمت کو تاریکی میں چھپا رکھا ہے اور جوہرات بیش بہا کو خاک میں ملا رکھا ہے۔....

 

ایک اور بڑا نقصان جو جماعت تمدنی کی پردہ خلاف شرع سے پہنچتا ہےیہ ہے کہ مردوں کو جوعورت کی طرف سے متعصب ہیں تمام جہاں کیا نگاہ سے اوجھل چار دیواری کے اندر عورتوں پر طرح طرح کے ظلم اور بدسلوکیاں کرنے کا موقع ملتا ہے اور اس باب میں ان پر جماعت تمدنی کا دباؤ جو تہذیب انسانی کا اصول سے بالکل نہیں پڑسکتا اور ہر شخص اپنے دائرہ حرام کے اندر خود مختار انہ اور جابرانہ حکومت کرتا ہے جس کی بازپرس کے لئے صرف قیامت کا دن مقرر ہے بہت کم شرفائے اہل اسلام نکلیں گے جن کا سلوک اپنے گھر کی عورت کے ساتھ اس خوش حیثیتی کے مطابق ہو جو طبقہ ذکور میں ان کی تنخواہ ان کی آمدنی ان کے مکانات سے ظاہر ہوتی ہے ۔....

 

اس حدیث سے صاف ظاہر ہے کہ اسما جس طرح او ر لوگوں کے روبرو ہوتی تھیں اسی طرح اپنے جیٹھ پیغمبر خدا کے روبرو ہوتی تھیں انہوں نے کوئی فرق پردہ کے باب میں اپنے جیٹھ یعنی پیغمبر خدا اور غیر محرموں میں نہیں رکھا تھا ۔ نہ رسول خدانے کوئی اس قسم کا فرق ان کا بتلا یا تم اور غیرمحرموں کے روبرو تو ہوا کرو اور  ہمارے روبرو ہونا موت کے برابر خطرناک سمجھو ہاں وہی مزاجوں کے وہم سے کچھ بعید نہیں کہ وہ یہ کہیں کہ ممکن ہے کہ اس وقت اسما کے منہ پر برقع پڑا ہوا اور وہ گھوڑے کو چرا کر اور بوجھ سر پراٹھا کر برقع اوڑھے آرہی ہوں اور پیغمبر خدا نے محض بیرونی قرائن سے ان کو شناخت کرلیا ہو۔...

 
آج بھی ہو جو ابراہم۔ سا ایماں پیدا
مولانا خالد سیف اللہ رحمانی

غرض کہ حضرت ابراہیم علیہ السلام کی حیات طیبہ کا قرآن کی روشنی میں مطالعہ کیا جائے تو اس کا خلاصہ صرف دوباتیں ہوں گی، دعوت حق اور اس راہ میں قربانی وفد اکاری، حضرت ابراہیم علیہ السلام نے اپنے رب کی رضا اور خوشنوی کے لئے اپنے آپ کو مٹانے میں کوئی کسر باقی نہیں رکھی ، اپنے آپ کو مٹایا ،اپنے تعلقات کو مٹایا ، بیوی اور شیر خوار بیٹے کی محبت کو مٹایا اور جوان بیٹے کو مٹایا، لیکن قربانی او راپنے آپ کو مٹانے حضرت ابراہیم علیہ السلام کو زندہ جاوید بتادیا،قرآن مجید نے متعدد مواقع پراس حقیقت کی طرف اشارہ کیا ہے، چنانچہ فرمایا گیا کہ ہم نے اسے دنیا میں بھی منتخب کرلیا  اور وہ آخرت میں بھی صالحین میں شمار ہوں گے۔....

 

ثانیاً : کوئی قطعی دلیل اس بات کی موجودگی نہیں کہ برادر شوہر کو موت کہنے سے یہ ہی مراد ہے کہ یہ امر موت کی طرح مہلک ہے بلکہ ممکن ہے کہ جناب پیغمبر خدا کی مراد یہ ہوکہ برادر شوہر کے روبرو ہونے سے کب اجتناب ہوسکتا ہے اس کا تو ضرور آمنا سامنا ہوگا جس طرح موت سے آدمی نہیں بچ سکتا اسی طرح عورت شوہر کے بھائی کے روبرو ہونےسے نہیں بچ سکتی۔ یہ معنی کچھ ہمارے گڑھے ہوئے نہیں ہیں بلکہ بڑے بڑے جلیل القدر علما کا یہی مذہب ہے جیسا کہ صاحب فتح الباری نے تحریر کیا ہے اور خاص شیخ تقی الدین صاحب شرح العمدہ کا نام بھی لکھا ہے۔...

 

پہلے حکم کے روسے ہندوستان کی عورت اہل اسلام کا وہ لباس بالکل خلاف شرع ٹھہرتا ہے جس کا دستور دہلی اور لکھنؤ کی شریف زادیوں میں ہورہا ہے کہ اس میں کرتی اس قدر اونچی ہوتی ہے کہ پائجامہ کے نیفہ اور کرتی کے کنارہ کے درمیا ن نہایت بے حیائی سے شکم نظر آتا رہتا ہے اور جن کی آستین اتنی چھوٹی ہوتی ہیں کہ امام ابو یوسف کے فتوے سے بھی جس سے صرف کہنیوں سے نیچے تک کے حصہ کو برہنہ ہونے کا جواز نکلتا ہے اس بے شرمی کی حمایت نہیں کی جاسکتی ۔علاوہ اس بے شرمی کے جو بازوں او رپیٹ کی برہنگی کھلنے سے متصور ہے سب سے بڑی آفت جو دہلی ولکھنو کی عورت پر آئی ہے۔...

 


Get New Age Islam in Your Inbox
E-mail:
Most Popular Articles
Videos

The Reality of Pakistani Propaganda of Ghazwa e Hind and Composite Culture of IndiaPLAY 

Global Terrorism and Islam; M J Akbar provides The Indian PerspectivePLAY 

Shaukat Kashmiri speaks to New Age Islam TV on impact of Sufi IslamPLAY 

Petrodollar Islam, Salafi Islam, Wahhabi Islam in Pakistani SocietyPLAY 

Dr. Muhammad Hanif Khan Shastri Speaks on Unity of God in Islam and HinduismPLAY 

Indian Muslims Oppose Wahhabi Extremism: A NewAgeIslam TV Report- 8PLAY 

NewAgeIslam, Editor Sultan Shahin speaks on the Taliban and radical IslamPLAY 

Reality of Islamic Terrorism or Extremism by Dr. Tahirul QadriPLAY 

Sultan Shahin, Editor, NewAgeIslam speaks at UNHRC: Islam and Religious MinoritiesPLAY 

NEW COMMENTS

  • Nice bhai and right.
    ( By Md samir ansari )
  • Very sensible and prudent column.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • The Ummah and the Caliphate are obsolete concepts and have no....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Marxism, democratic socialism and enlightened capitalism are all laudable....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • UN has lost its credibility. It is simply a forum of debate. Hardly does...
    ( By Salman )
  • Adopting Christianity means adopting true religion of Allah.
    ( By Mahender Kumar )
  • Islam promotes violence ......etc against Khafirs.
    ( By Dr.A.Anburaj )
  • Talha's comment shows how talaq has been turned into a joke. People have derived new types of talaq...
    ( By Arshad )
  • The comment was posted thru mobile phone. And while typing on mobile, some errors occur and also it's automated dictionary takes pushes some words into ...
    ( By Arshad )
  • Saying that Islam emphasized education is hardly hubris except in the...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • کیوں نہ اہل ذکر سے مراد ماہرین لئیے جائیں یعنی جب بھی کوئی مسئلہ ہو اس علم کے ماہر سے پعچھع
    ( By qasim raza Tirmiz zi )
  • it is time for muslims globally - not just in india) to get out of their superiority...
    ( By hats off! )
  • Your article is in the same vein as current discourses in international....
    ( By Dr. Sharifah Munirah Alatas )
  • Good article! The author talks sense.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Hats Off hates any Muslim who favors peace, education and modernization....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Anything that promotes violence, coercion, intolerance, takfirism...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • such a breathtaking, once-in-a-millennium, nobel-prize-worthless comment...
    ( By hats off! )
  • Very interesting discussion, specially the brand new concept of "duty-free divorce." But....
    ( By Sultan Shahin )
  • No doubt, debate on Islamic ideologies must happen.
    ( By gholam ghouse )
  • I appreciate your thoughts.
    ( By Usha Jha )
  • If this is a religion of peace, then why is it not believed so by Jihadists and some Extremist non Muslims?,...
    ( By Talha )
  • These terrorists are weakening Muslims and therefore are playing the role of agents of anti-Islamic elements. '
    ( By Anjum )
  • لإخوان يستحلون قتل المخالف ولو كان ضعيفا محروما مقهورا، وفي أقل الأحوال يعملون على تشويهه وتقديم المبررات لاغتياله. '
    ( By عادل الشعبی )
  • Asking Zakir Naik to stop belittling the religions of others is tantamount to defanging him! He knows nothing else!
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Personal and family laws should be the responsibility of civil society. Religious scholars should keep out of....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • The United Kashmir Peoples National Party (UKPN) advocates a united...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Next move should be to bring the RSS on the path of Gandhi and Nehru...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • It is not just Arab wealth. It is also Arab racism. The Prophet's last sermon....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • What a depraved and ignorant comment from Hats Off! She represents Christians, Jews, Muslims, Hindus and atheists of her little constituency in Minnesota.'
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • ilhan omar represents the free-booters and scalawags like some....
    ( By hats off! )
  • Ilhan Omar never said she represents all Muslims, or even Muslims....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • It is in the nature of fascist organizations to spread paranoia.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Female circumcision must be prosecuted as a criminal assault with stiff penalties
    ( By Ghulam Mohiyuddin Faruki )
  • yahood o hanoodon se nafrat islami fitrat hai
    ( By hats off! )
  • are kafir admi ye Sarah edan BHI Muslim Nahi hai yahudi hai
    ( By Syed Mohammad Faizan )
  • This man is dishonest, mostly in western countries other minority's are well integrated and never....
    ( By Aayina )
  • Because democracy is run by Hypocrites and capitalist. Other factor added in last 70 years was ....
    ( By Aayina )
  • Instant Triple Thalak is banned and one Monolithic Arabian practice is eiiminated. Another Monolithic Arabian practice....
    ( By dr.A.Anburaj )
  • Shamless Hindu showing his Manhood power to grab girls, like Muslims. Shame on this kind of Hindus ....
    ( By Aayina )
  • Taha Deceiving is not explanation. Might be clear to you now.'
    ( By Aayina )