certifired_img

Books and Documents

Urdu Section

By Farooq Argali

 

 

The opposition of Central Madrasa Board is needless. It is not in favour of Muslim community. This Board will obviously help in the development of Muslims. The present government is minority-favouring and they are trying to establish a greatly needed Board on the basis of Sachchar Committee recommendations. Unfortunately, that is being opposed by none other than the Muslims intellectuals and scholars of the country themselves. It will help our madrasa students to acquire Islamic and modern education, at the same time enabling them to reach to higher government posts. Sir Syed Ahmad Khan had founded Mohammedan Anglo-Oriental College in 1857 with the aim and ambition of the welfare of Muslim community. It is presently world-famous with the name Aligarh Muslim University for the great service it is doing for the welfare of the community. His effort too, was vehemently opposed at the initial stage by the then Islamic scholars and educationists. -- Mahmood Alam Siddiqui (Translated from Urdu by Raihan Nezami)

ہریانہ، ہندوستان اور اردو کے اس نامور فرزند کی ولادت 1837کو پانی پت کے محلّہ انصار یان میں ہوئی ۔ ان کے والد کا نام خواجہ ایزوبخش تھا۔ حالی کے جد اعلیٰ سلطان غیاث الدین بلبن کے عہد میں ایران سے ہندوستان آئے تھے ۔ مدت دراز تک یہ خاندان نہایت معزز ،مقبول اور خوشحال رہا۔ لیکن استداد زمانہ کے ہاتھوں حالی کے والدخواجہ ایز دبخش غربت وافلاس کی زندگی گزاررہے تھے۔حالی نے اسی تنگدستی اور ناداری کے ماحول میں آنکھ کھولی۔ ان کی پیدائش کے کچھ عرصہ بعد والدہ کا انتقال ہوگیا۔ جب وہ 9سال کے تھے والد بھی اس دنیا سے رخصت ہوگئے ۔ ان کی پرورش ان کے بڑے بھا ئی نے کی۔....

 

سرسیّد نے تعلیم پر اس لیے زیادہ زور دیا کہ انہیں اندازہ ہوگیا تھا کہ انگریزوں کو ہتھیار اور مادّی قوتوں سےشکست نہیں دی جاسکتی کیونکہ پوری دنیا میں مسلمان دھیرے دھیرے زوال کی طرف جارہے تھےاور یورپ نے 16ویں اور 17ویں صدی میں جو سائنسی برتری حاصل کی تھی اس کی زد میں دھیرے دھیرےسارے مسلمان ملک آرہے تھے ۔اسی لیے سرسیّد نے زیادہ زور جدید تعلیم پر دیا ان کو یہ بات سمجھ میں آگئی تھی کہ جدید تعلیم کے بغیرمسلمانوں کا مستقبل بالکل تاریک ہے۔سرسیّد کی دوربین نگاہوں نے دیکھ لیا تھا کہ زندگی نے جو رخ اختیار کرلیا ہے اس کو بدلا نہیں جاسکتا اس میں رکاوٹ پیدا کر کے اس کی رفتار کو بھی روکا نہیں جاسکتا بلکہ ایسا کرنے والے خود تباہ ہوکر رہ جائیں گے۔  ڈاکٹر شکیل صمدانی

سرسید احمد خاں 1817میں دہلی کے ایک معزز خاندان میں پیدا ہوئے ۔ آپ کے والد میر متقی اور والدہ بڑی نیک سیرت باہمت ،بااخلاق اور حوصلہ مند خاتون تھیں۔ آپ کی تعلیم وتربیت میں والدہ کا ہی سب سے بڑا حصہ ہے۔ انہوں نے آپ کو ایمانداری اور سچائی کی زندگی پر چلنے کا راستہ سکھایا۔ سرسید پڑھ لکھ کر 1838میں ایسٹ انڈیا کمپنی میں ملازم ہوگئے ۔ ان کی سچائی اور ایمانداری سےمثاثر ہوکر سرکار نے انعامات سے نوازہ اور ترقی کر کے جج بن گئے ۔ 1842میں بہادر شاہ ظفر نےسرسید کو ‘‘عارف جنگ جوالدولہ’’ کا خطاب عطا کیا ۔سرسید انگریز حکومت کے وفادار ہونے کے باوجود حق بات کہنے میں کبھی نہیں جھجکتے تھے ۔ انہوں نے انگریزوں کے خلاف سختی سے نکتہ چینی کی ہے۔....

آخر کیا وجہ ہے کہ کل تک اسلامی نظام کی بات کرنے والی یہ تنظیمیں بہت اچھی لگتی تھیں آج اچانک خراب لگنے لگیں ۔ جو کل تک روس، امریکہ اور اسرائیل کے خلاف اعلان جنگ کررہی تھیں آج وہی پاکستان اور ایران کے خلاف محاذ آرائی پراتر آئی ہیں۔مسلمانوں کا قتل عام کرکے ، مسلمانوں کو مار کر ، ان کے گھروں کو تباہ وبرباد کرکے، اپنی ہی بہن بیٹیوں کو بیوہ کر کے، اپنے ہی بچوں کو یتیم کرکے، آخر یہ کون سانظام مصطفیٰ نافذ کرنا چاہتے ۔ جس نظام میں سبھی لوگ لنگڑے ،لولے،اپاہج ،نابینا نظر آئیں گے۔....

 

مولانا رحمانی کے اس ا نقلابی اقدام نے  ہماری توجہ ایک اور حقیقت کی طرف بھی منعطف کرائی۔ مسلمانوں کی معاشی ، تعلیمی اور سماجی زندگی میں جس بہترین کی کوشش جنوبی ہندوستان میں کی جارہی ہیں ،شمالی ہندوستان میں ان کوششوں کا عشر عشیر بھی نظر نہیں آتا ۔ کیرل ،کرنانک، تمل ناڈو اور آندھرا کی غیر سیاسی مسلم تنظیمیں جوکام کررہی ہیں، شمالی ہندوستان میں بہت سے لوگوں کو ان کا علم بھی نہیں ہے۔ ایک تو شمالی ہندوستان میں غیر سیاسی مسلم تنظیمیں ہی عنقا ہیں اور جو ہیں بھی ،انہوں نے کوئی ایسا کارنامہ انجام نہیں دیا ہے ، جس کی مثال دی جاسکے ۔...

یونیورسٹی کا اقلیتی کردار عزیز ہے جائز بات ہے۔ علی گڑھ والوں کو مسلم یونیورسٹی میں مسلمانوں کی اکثریت برقرار رہنے کی فکر ہے صدفی صد اس کا حق ہے۔

لیکن ان خواہشات کی تکمیل کے لئے ہم اپنے علاوہ ہر دوسرے شخص کو ذمے دار سمجھتے ہیں ۔کبھی ہمیں حکومت سے شکایت ہوتی ہے کبھی ہمیں وائس چانسلر سے شکوہ ہوتا ہے ،کبھی ہم ملت کے اکابرین سے مطالبات کرتے ہیں ۔پھر الزام اور جوابی الزام کا سلسلہ شروع ہے۔ پھر گروپ بندیاں ہوتی ہیں، اخباری بیانات آتے ہیں، مقدمے بازی ہوتی ہے،یونیورسٹی بند ہوتی ہے ، پولس آتی ہے ، اخراج ہوتا ہے ، گرفتاریاں ہوتی ہیں، ہندی اور انگریزی اخبارات جم کر یونیورسٹی کو بدنام کرنےوالی خبریں ،مضامین اور رپورٹیں شائع کرتے ہیں ۔  جاوید حبیب

 

صاحبو! سندھ کی رواداری کے کیا کہنے ۔ہندو یہا ں کے جدی پشتی رہنے والے ’ بد ھ مت کے ماننے والے یہاں آباد’ فتح ایران کے بعد جان بچا کر بھاگنے والے آتش پرست جو پارسی کہلاتے ہیں ، یہاں ان کی اگیاریاں قائم ہوئیں اور ا نہیں پناہ ملی ۔انیسوی صدی میں قاچاریوں نے بہائیوں کے سروں میں میخیں ٹھونکیں اور ان کی کھالیں کھینچیں تو انہیں سندھ جائے امان نظر آیا ۔عیسائی یہا ں موجود ،ان کے کیسے شاندار گرجا گھر اپنی بہار دکھاتےہیں ۔ 20ویں صدی شروع ہوئی تو کراچی میں 2500یہودی رہتے تھے ۔تاجر ’ سول سرونٹ’ استاد اور ہنر مند ۔ ان کے لئے 1893میں مگین شلوم کے نام سے ایک سینی گاگ تعمیر ہوا۔ پاکستان بننے کے بعد یہاں یہودیوں کے خلاف جس طرح مہم شروع ہوئی اس کے بعد کراچی میں رہنے والے او رمراٹھی بولنے والے یہودیوں کے خلاف جس طرح مہم شروع ہوئی اس کے بعد کراچی میں رہنے والے اور مراٹھی بولنے والے یہودیوں نے ہندوستان ’ اسرائیل اور انگلستان کا رخ کیا۔    زاہدہ حنا

 

اطلاعات کے مطابق علی اشرف فاطمی ،سابق وزیر مملکت فروغ انسانی وسائل ،حکومت ہند کی پیش کردہ تجویز برائے تشکیل ‘‘مرکزی مدرسہ بورڈ’’ کے سلسلے میں جو کام شروع ہوا تھا،اس ‘مجوزہ بورڈ’ کے مسو دہ پرمسلم ممبران پارلیمنٹ اس وقت نظر ثانی کررہے ہیں۔ ترمیم واصلاح ودیگر ضروری کارروائیوں کے بعد اگر بورڈ کا بل پارلیمنٹ میں پیش اور ممبران پارلیمنٹ کے بحث ومباحثہ کے بعد پاس ہوجاتا ہے تو یہ بورڈ سی بی ایس سی کے مساوی ایک نصاب تیار کرے گا جس کا امتحان دے کر مدارس کے طلبہ ہائی اسکول اور انٹر کے مساوی سند حاصل کرسکیں گے ۔...

مسلمان مجموعی طور پر اس حرکت کی ضرورت یا اہمیت سے مطمئن نہیں ہیں۔ وہ جو سب سے پہلا سوال اٹھاتے ہیں وہ یہ ہے کہ آخر حکومت تمام مدرسوں کو کسی ایک مرکزی انتظامیہ کے تحت لانے کے لئے کیوں بے چین ہے، حالانکہ وہ اچھی طرح جانتی ہے کہ اس طرح کا کوئی سنٹرل بورڈ سنسکرت پاٹھ شالاؤں کے لئے موجود نہیں ہے، جن کی تعداد مدرسوں کی تعداد سے کہیں زیادہ ہے۔...

آپ کا نام نجیب الدین ہے اور آپ کا لقب متوکل ہے۔ آپ کے لقب کی وجہ یہ بتائی جاتی ہے کہ آپ صرف اور صرف اللہ پر توکل کرتے تھے حالانکہ اہل وعیال ساتھ تھے لیکن زندگی بھر کبھی کسی کے سامنے ہاتھ نہیں پھیلایا ۔ آپ صاحب دل ،صاحب کشف وکرامات تھے، آپ کا توکل مثالی تھا اورکیوں نہ ہوتا آپ حضرت بابا فرید گنج شکرؒ جیسے عظیم المرتبت بزرگ کے حقیقی چھوٹے بھائی ،مرید اور خلیق تھے۔ حضرت نجیب الدین متوکل ؒ اپنے بڑے بھائی حضرت بابا فرید گنج شکرؒ کے ہمراہ دہلی آئے تھے جب حضرت بابا فرید قدس سرہ پاک پٹن شریف گئے تو انہوں نے اپنے بھائی حضرت نجیب الدین متوکل ؒ کو دہلی میں ہی رہنے کی ہدایت دی۔ ....

 

حقیقت یہ ہے کہ مسلمانوں کی طرف سے حکومتوں کے مسلسل تغافل ،مدارس عربیہ کے کردار اور خدمات کو نظر انداز کرنے کی لگاتار کوشش بلکہ ان پر بنیاد پرستی، تنگ نظری اور دہشت گردی جیسے الزامات لگانے کی مسلسل مہم نے اس منصوبے کی افادیت ختم کردی ہے، آج ہر طرف سے یہ سوال کیا جارہا ہے کہ آخر حکومت کو ساٹھ سال کے بعد مدارس کی حالت سدھار نے کا خیال کیسے آگیا ،مسلمانوں کا یہ شک اپنی جگہ بالکل صحیح ہے کہ حکومت مدارس کے بڑھتے ہوئے اثرات سے خوف زدہ ہے اور وہ ان کے فعال کردار کو محدود کرنا چاہتی ہے او ریہ کام اسی طرح ممکن ہے کہ انہیں مدرسہ بورڈ کی بھول بھولیوں میں الجھا دیا جائے۔....

 

وہ شخص بڑا خوش نصیب ہے جسے اسلام کے اس اہم رکن کی ادائیگی کی سعادت حاصل ہو اور اس سے بھی زیادہ خوش نصیب وہ شخص ہے جو اس عبادت کو محض دنیاوی نام ونمود کے لئے ادا نہ کرے بلکہ اس کا مقصد فرض کی ادائیگی کے ساتھ ساتھ حج کی برکتوں ،سعادتوں اور رحمتوں کا حصول بھی ہوا اور وہ اس فرض کی تکمیل اس طرح کرے کہ اس کا حج، حج مبروربن جائے، جس کی بڑی فضیلت وارد ہے، حدیث شریف میں ہے کہ سرکار دوعالم ﷺ نے ارشاد فرمایا : الحج المبرور لیس لہ جزا الا لجنۃ (صحیح البخاری :2/629، رقم الحدیث :1683)‘‘ حج مبرو رکا ثواب صرف جنت ہے’’ ۔....

 

رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: وہ شخص جھوٹا نہیں ہے جو لوگوں کے درمیان صلح وصفائی کراتا، بھلائی کی بات کہتا اور ایک دوسرے کو اچھی باتیں پہنچاتا ہے۔ (اگرچہ وہ صلح وصفائی کی نیت سے جھوٹ سے کام لے)امیر المومنین خلیفہ ثانی حضرت عمر فاروقؓ نے اپنے قاضیوں کے لئے یہ فرمان جاری فرمایا: رشتے داروں کے مقدمات کو انہی میں واپس لوٹا دیا کرو تاکہ وہ خود برادری کی امداد سے آپس میں صلح کی صورت نکال لیں ۔فقہاء نے لکھا ہے کہ اگر چہ فاروق اعظمؓ کے فرمان میں یہ حکم رشتے داروں کے باہمی جھگڑوں سے متعلق ہے مگر اس میں حکمت مذکورہ ہے کہ عام ہے، باہمی کدورت اور عداوت سے سب ہی مسلمانوں کو بچانا ہے، اس لئے حکام اور قضاۃ کے لئے مناسب یہ ہے کہ مقدمات کی سماعت سے پہلے اس کی کوشش کرلیا کریں کہ کسی صورت سے فریقین کی آپس میں رضا مندی کے ساتھ مصالحت ہوجائے ۔ (بحوالہ معارف القرآن ،مفتی محمد شفیع)۔    محمد ابراہیم خلیل

 

ایک طرف دونوں حکومتوں کا یہ جنگ جو یا نہ رویہ ہے ،دوسری طرف دونوں حکومتوں نے اپنے عوام کی فلاح وبہبود کو یکسر فراموش کررکھا ہے۔ نتیجے میں دونوں طرف کے شہری بیروزگار ی ، بے تحاشہ بڑھتی ہوئی آبادی ،جہالت، ظلم اور ناانصافی کی دلدل میں دھنستے چلے جارہے ہیں ۔ دونوں طرف مذہب کے نام پر سیاست کرنے والی جماعتوں اور طاقت کے سرچشمے پر قابض عناصر نے عوام کے شعور میں اضافے کی بجائے انہیں کچھ زیادہ تنگ دل ، تنگ نظر اور جنگی جنون کا ایندھن بنادیا ہے۔    زاہدہ حنا

 

Presently, the question is not about whether madrasas are encouraging terrorism or not?  The question of great concern is why madrasa officials are afraid and not interested in affiliation with a central Board. Some of them are talking about the danger of increasing corruption; in fact, they are afraid of losing their hold of proprietorship, status and authority as they will have to follow a code of conduct and certain terms and conditions. The corruption prevalent in the payment of teachers’ salary and the manner of imparting education will be exposed. The proposal of madrasa board may also expose the dishonesty of our Islamic scholars. This makes the prospect of reform very bleak as the ruling political parties are helpless before them and cannot afford their displeasure and annoyance. -- Tahir Khaleel. (Translated from Urdu by Raihan Nezami)

 

 

دراصل آج لوگوں نے مشاعروں کو اپنے اپنے طور پر مختلف مفادات کے حصول کا ذریعہ بنا رکھا ہے۔ مشاعرہ برائے مشاعرہ کے تصور نے جہاں ایک زمانے تک اردو زبان وادب اور خصوصاً اردو تہذیب کو توانائی بخشی تھی وہیں اب مشاعرہ برائے قومی یکجہتی مشاعرہ برائے مشترکہ تہذیب ، مشاعرہ برائے تحفظ امن وامان کی نئی روش نے مشاعروں کو پروپیگنڈہ سے قریب تر کردیا ہے لوگوں نے اس بنیادی امر کو فراموش کردیا ہے کہ اردو زبان وادب کاوجود بذاب خود قومی یکجہتی ،مشترکہ تہذیب اور باہمی اتحاد کا نتیجہ ہے۔....

 

Contemplating the plight of Muslims in the world despite their large numbers – one fourth of humanity - Zafar Agha concludes that this is because Muslims have gone back to the days of the pre-Islamic Jahiliya, though they still claim to abide by Islamic tenets. Islam had freed them from monarchy, feudalism, subservience to an obscurantist priestly class and ignorance. But once again they have left pursuing modern education and rule by consultation and have adopted a monarchical, feudal and exploitative system of governance in most parts of the Muslim world and have come to depend on conservative ulema alone for their education. Hence their degradation, political impotence and a life of slavery despite very large numbers.


اعداد وشمار کا یہ کھیل بظاہر سننے اور دیکھنے میں اچھا لگتا ہے ،لیکن اگر غور کیا جائے تو مسلمانوں کے لئے اس سے زیادہ بری صورت حال او رکوئی نہیں ہوگی۔ آج دنیا کی تمام طاقتیں اس کے خلاف متحد ہیں ،مگر وہ خود آپس میں ہی لڑرہا ہے۔ اس وقت مسلم ممالک کی تعداد 56یا اس سے کچھ زیادہ ہے۔ عرب ممالک بھی 22ہیں لیکن کیا یہ 56ممالک مسلمانوں کے تعلق سے کسی بھی ایک عالمی مسئلہ پر متحد ہیں؟ اور اگر وہ متحد ہو بھی جائیں تو کیا ان کے آگے کوئی ایک ملک بھی ڈر ے گا؟ فی زمانہ مسلمانوں کے جو اعمال ہیں، ان سے تو نہیں لگتا کہ تمام مسلم ممالک کے اتحاد سے بھی کوئی اسلام دشمن ملک کو خوف کھائے گا۔....

مثال کے طور پر آر جے ڈی سپریمو لالو پرساد  کو ہی لے لیجئے ، لالو جی اپنے سیاسی مفادات کے حصول کیلئے 15برسوں تک ریاست بہار میں مسلمانوں کی زبو ں حالی پر دکھاوے کا ناٹک کر کے رجھاتے رہے ،جس سے انہیں وہ تمام مقاصد تو حاصل ہوگئے ۔ جس کیلئے انہوں نے بہروپئے کا روپ اختیار کرلیا تھا۔15برس کے آر جے ڈی کے دور اقتدار میں مسلمانوں کی غربت پر اشک بہانے والے یہ لیڈراور ان کےمصا حبین مالا مال ہوتے رہے وہ زمین سے آسمان کی بلندی سرکرنے میں کامیاب ہوگئے مگر ریاست کے تقریباً 27فیصد مسلمانوں کی حالت لمحہ بھر کے لئے بھی نہیں بدلی ،وہ جہاں تھے اس سے بھی نیچے دھنستے رہے ۔....

 

By Agha Masood Hussain

 

 

مرنے والے بھی مسلمان اور مارنے والے بھی مسلمان یہ کن کے خلاف جنگ کررہے ہیں یہ سب کے سب تو اسلام کے ماننے والے ہیں اور سب کلمہ گو ہیں۔ اس طرح اسلامی اصول کے تحت دونوں آپس میں بھائی بھائی ہیں۔ تو کیااسے بھائی بھائی کی لڑائی کہیں گے ؟میرا خیال ہے کہ اس میں صرف یہی ایک ظاہری وجہ نہیں ہے بلکہ اس میں ایک بڑی وجہ یہ ہے کہ انہیں کئی سطحوں پر مشتعل کیا جاتا ہے ۔ اس اشتعال میں سیاسی ،معاشرتی اور ملکی مسائل اور غیر ملکی تسلط بھی بڑی اہمیت رکھتے ہیں۔...

 

By Abu Mohammad

 

 


Get New Age Islam in Your Inbox
E-mail:
Most Popular Articles
Videos

The Reality of Pakistani Propaganda of Ghazwa e Hind and Composite Culture of IndiaPLAY 

Global Terrorism and Islam; M J Akbar provides The Indian PerspectivePLAY 

Shaukat Kashmiri speaks to New Age Islam TV on impact of Sufi IslamPLAY 

Petrodollar Islam, Salafi Islam, Wahhabi Islam in Pakistani SocietyPLAY 

Dr. Muhammad Hanif Khan Shastri Speaks on Unity of God in Islam and HinduismPLAY 

Indian Muslims Oppose Wahhabi Extremism: A NewAgeIslam TV Report- 8PLAY 

NewAgeIslam, Editor Sultan Shahin speaks on the Taliban and radical IslamPLAY 

Reality of Islamic Terrorism or Extremism by Dr. Tahirul QadriPLAY 

Sultan Shahin, Editor, NewAgeIslam speaks at UNHRC: Islam and Religious MinoritiesPLAY 

NEW COMMENTS

  • Very nice article,full of objectivity and vision.
    ( By Shrikaant Saxena )
  • have you come back from your pathological world tour? welcome home....
    ( By hats off! )
  • یہ بھی خیال رکھیں کہ ائمہ کرام نے مذکورہ بحث میں ایک معروضہ قائم کرکے اس کا جواب بھی قلمبند کیا ہے ۔وہ یہ کہ ...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • @KF and Satish, you too should know that, one of the Hanafi Principles of Jurisprudence is that Amr bil Feil (commanding any specific...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • bahut khubsurat aur INTERESTING science hai ye, suna hai is science ko hum sahih se padhenge....
    ( By Talha )
  • حنفی فقہ کا ایک اصول ہے کہ امر بالفعل یعنی کسی کام کا امر (حکم) تکرارکا تقاضہ نہیں کرتا ۔یعنی کسی شخص نے آپ کو ...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • Amir bittakraar ki bahas mujhe samjha den. mujhe aaj tak ye bahas samjh me nahi aayi. mujhe....
    ( By KF )
  • Hats Off will utter any mean-spirited lie as long as it maligns Muslims! This has become his pathological obsession!
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • heaven and earth were never an integrated mass. you seem to be much more ignorant....
    ( By hats off! )
  • معاف کیجئے گا جناب ، میں نے آپ کے لیے ادھرملازمت کرکے ادھر بھی لڈو اور ادھر ملازمت کرکے ادھر بھی لڈو کا استعمال ...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • رہی بات حنفی ، شافعی ، مالکی اور حنبلی ائمہ کرام کے جہاد پر مبنی اقوال کی تو سیدھی بات یہ ہے کہ ان اقوال ...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • The question is: are you indirectly blaming newage for paying for dishonesty? My answer is: not at all. You should....
    ( By GGS )
  • People think they can attain Marifat by spending hours but this is not the sole truth, but rather there lies some sort....
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • Alhamdulillah, since 6 years I have been writing on newage but I have never been forced to write against my faith....
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • I do not need to be accountable to you or Mr Sultan Shahin on religious issues. I may be accountable to him for office hours ...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • Astaghfirullah.'
    ( By GGS )
  • GGS, apki tabiyat kharab to nahi hogayi hai. '
    ( By arshad )
  • GGS, when you refute jihadi ideology, you should honestly criticise not only the ihadi organisations....
    ( By arshad )
  • GGS, once again you proved that you are suffereing from a superiority complex. Read my comment once again. I...
    ( By arshad )
  • How did you know I am Sahab, I can be Shahiban. What is relevant to age '
    ( By Aayina )
  • G, khushfahmi dur karne ki niyyat se zarur likhen. Yahi maqsad rah gaya hai...
    ( By GGS )
  • dara shikoh is a hero only for the hindus. as far as most...
    ( By hats off! )
  • Qur'an had nothing to do with the scientific explosion in the islamic....
    ( By hats off! )
  • Allah ka Karam hai.Zara masruf tha isliye apke comment ka jawab...
    ( By Arshad )
  • शहद दिखाए ज़हर पिलाए, कातिल डायन शौहर कुश इस मुर्दा र पर क्या ललचाया दुनिया देखी भाली है
    ( By Paaji )
  • Wow. Tabiyat kaisi hai Janab
    ( By GGS )
  • It is imperative that interfaith cooperation is developed....
    ( By Kaniz Fatma )
  • ISIS has been destructing Muslim countries but it remains a potent....
    ( By GGS )
  • Comment 8- on the usage of zulm in the Quran God Almighty says....
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • Comment 7- on the usage of Zulm in the Quran Allah Almighty says,....
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • Later madrasa products shunned science and engaged in the " created....
    ( By Arshad )
  • Tauba Tauba. So-called Muslims'
    ( By GGS )
  • Comment 6- The usage of Zulm in the Quran The Quran reads, وَإِذْ قَالَ مُوسَىٰ لِقَوْمِهِ يَا قَوْمِ إِنَّكُمْ ظَلَمْتُمْ أَنفُسَكُم بِاتِّخَاذِكُمُ الْعِجْلَ فَتُوبُوا....
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • Aayina sb, you say to Satish, “Satish Your expectation is wrong and this people lie vey easily”. I have grounds to disagree with you when you ...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • If we should think of what our divine commands guide us to, we should think of it with genuine heart, indepth feeling,...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • @KF & Satish, please take the following passage to the depth of your consciousness, only to understand it properly, but...
    ( By Ghulam Ghaus Siddiqi غلام غوث الصديقي )
  • hatts off is write world will catch up in rape and lust activity to achieve women's body, even men....
    ( By Aayina )
  • To Satish NAI can you leave the spacing in paragraphs as they easy to read and understand, I have seen when...
    ( By Aayina )
  • Do we not tolerate when you say 'unholy things' about the Holy book?
    ( By GGS )
  • Making comparisions between flourishing Western science and (non-existent) Islam-inspired science...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )