certifired_img

Books and Documents

Urdu Section

مجموعی طور پر اس مضمون سے دہشت گرد تنظیموں کو سبق ملتا ہے کہ وہ مندرجہ بالا آیت (22:39)، کی بنیاد پر دہشت گردی کے کسی بھی فعل کو انجام دینے کے لئے کسی بھی قسم کا جواز پیش نہیں کرسکتے اور نہ ہی اپنے عزائم کی تکمیل کے لئے کسی بھی ملک کے مسلمانوں یا غیر مسلموں کو قتل کرنے کا جواز تلاش کرسکتے ہیں۔ اسلام کے حقیقی مقصد کو سمجھے بغیر، اگر وہ مسلسل دہشت گردی کا ارتکاب کرتے رہیں اور معصوم شہریوں کے قتل کو جاری رکھیں تو ان کا یہ عمل اسلامی شریعت پر افترا اور جھوٹ باندھنے کے علاوہ  کچھ نہیں ہو گا۔ اس طرح وہ ان جھوٹ باندھنے والوں کے زمرے میں شامل ہو جائیں گے جن کا ذکر اللہ کے اس کلام میں ہے "اور اس سے بڑھ کر ظالم کون جو اللہ پر جھوٹ باندھے۔" (6:93)

 

اگر ا س میں ان سعودی سلفی فقہاء پر سوالات نہیں اٹھائے جاتے ہیں جنہوں نے سعودی عرب کی درسی کتابوں میں انتہا پسندی کو فروغ دیا ہے تو ہندوستانی سلفی علماء کی جانب سے دہشت گردی کے خلاف اس فتوے کو معمولی ہی سمجھا جائے گا ۔ مثال کے طور پر سعودی عرب میں ساتویں جماعت کے طالب علموں کو اب بھی یہ تعلیم دی جا رہی ہے کہ "اعلائے کلمۃ اللہ کے لئے کافروں سے لڑنا" اللہ کی نظر میں سب سے پسندیدہ عمل ہے۔ دسویں جماعت کے طالب علموں کو یہ تعلیم دی جاتی ہے کہ اسلام چھوڑنے والے مسلمانوں کو تین دن تک جیل میں رکھنا چاہئے اور اگر وہ اپنا فیصلہ نہ بدلیں تو انہیں اپنے اصل مذہب سے پھر جانے کی پاداش میں قتل کر دیا جانا چاہئے۔ چوتھی جماعت کے طالب علموں کو یہ پڑھایا جاتا ہے کہ غیر مسلموں کو "حق کا راستہ دکھایا گیا لیکن انہوں نے یہودیوں کی طرح اسے چھوڑ دیا" اور"عیسائیوں کی طرح حق کو جہالت اور توہم سے بدل دیا ہے۔"

 

غور طلب بات ہے کہ جہاد کا حکم سب سے پہلے مکہ میں اس وقت نازل ہوا جب کہ ابھی جہاد بالسیف  یا دفاعی جنگ کی اجازت بھی نہیں ملی تھی ۔ مکہ کے ابتدائی دور میں صحابہ کرام پر ظلم و ستم کے پہاڑ توڑے جاتے مگر انہیں اپنی حفاظت میں لڑنے کی اجازت نہیں تھی۔دفاعی جنگ کی ممانعت کے لیے بھی مکہ شریف میں تقریبا ستر آیات کریمہ کا نزول ہوا  مگر جہاد کے متعلق پانچ آیات کریمہ نازل ہوئیں ۔اب سوال پیدا ہوتا ہے اگر مکی دور میں  ستر آیات کریمہ کے نزول نے جنگ کی ممانعت کر دی تو  پھر جہاد کے متعلق  تب پانچ آیتیں کیوں نازل  ہوئیں ؟ کیا جہاد کا معنی قتال نہیں ؟ آئیے ہم حسب ذیل میں تحریر میں بخوبی سمجھیں۔

 

قرآن میں دوسری تہذیبوں سے بھی الفاظ مستعار لئے گئے ہیں جن سے سامی تہذیب کا اپنے ہمسایوں سے تعلق کی طرف اشارہ ملتا ہے۔ قرآن کریم میں دو اہم الفاظ "قرطاس" (کاغذ) اور "قلم" یونانی زبان سے لئے گئے ہیں ، جو کہ اس علاقہ کی ثقافتی زبان تھی اور اب یہ ترکی، شام، لبنان، فلسطین اور اردن میں مروج ہے (یہی وجہ ہے کہ انجیل اور عہد نامہ جدید میں سینٹ پال کا رسم الخط یونانی ہے)۔ قطر ایک یونانی لفظ "چارٹس (Chartes)" کی عربی شکل ہے اور "کلام" یونانی لفظ "کلاموس (Kalamos)" سے لیا گیا ہے۔

 
Loving God and Living Fully  خدا کی محبت مسرور زندگی کی ضمانت
Rev. Dr. Richard Howell
Loving God and Living Fully خدا کی محبت مسرور زندگی کی ضمانت
Rev. Dr. Richard Howell, Tr. New Age Islam

اطاعت شعاری صرف جھوٹ بولنے ، زنا کرنے یا متشدد رویہ اختیار کرنے جیسے محض خارجی گناہوں کے ارتکاب سے بچنے کا ہی نام نہیں ہے ، اگرچہ یقینی طور پر اطاعت شعاری میں یہ تمام باتیں شامل ہے۔ بلکہ اطاعت شعاری اپنے اقدار، جذبات اور دلوں کی کیفیات کو بھی خالق کائنات کے حضور پیش کر دینے کا نام ہے۔ خدا عزم مصمم سے کم کا مطالبہ نہیں کرتا ہے: " اپنے رب کو اپنے دل و جان سے محبت کرو۔" (متھیو 38-22:37)۔ اس سے زیادہ کچھ بھی اہم اور کچھ بھی ضروری نہیں ہے۔

 

حضرت علی رضی اللہ عنہ سے کسی نے پوچھا ، کیا وجہ ہے کہ پہلے تینوں خلفا کے دور خلافت بڑے انتظام سے گزرا اور کسی گوشے سے اختلاف و مخالفت نہیں ہوئی مگر آپ کے دور خلافت میں ہر طرف انتشار  اور بے چینی پائی جاتی ہے ؟ آپ نے فرمایا: ان کے دور کے خلافت میں ہم ان کے معاون تھے اور ہمارے دور خلافت کے معاون تم ہو (ایضا ۱۵۸) .حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : چار آدمیوں کی محبت کسی منافق کے دل میں جمع نہیں ہو سکتی اور نہ ہی مومن کے سوا کوئی ان چاروں سے محبت کر سکتا ہے وہ چار لوگ ابو بکر ، عمر ، عثمان اور علی رضی اللہ عنہم ہیں (ابن عساکر ، الصواعق المحرقہ :۱۱۹)

 

کامل نے کہا کہ درحقیقت ، " اخوان المسلمنو کے بانی حسن البنا ایک صوفی سلسلہ الطريقۃ الحصافیۃ کے ایک رکن تھے۔ اخوان المسلمین کی ساخت سلاسل تصوف کے مطابق ہے۔ ۔۔۔ یہ جاننا کافی ہے کہ سلسلہ التیجانیۃ کے بانی محمد حافظ التیجانی (مرحوم)، حسن النبا کے سب سے بڑے حامی تھے۔ اس کے علاوہ عصام العريان ، جمال حشمت اور صبحي صالح جیسے اخوان المسلمین کے رہنما اسکندریہ میں ایک صوفی بزرگ ابو العباس المرسی کی تقریباتِ یومِ پیدائش میں شرکت کرتے تھے’’۔

 

اگر داعش مغربی افریقہ میں قدم جمانے میں کامیاب ہوگئی تو وہاں سے یورپ اور امریکہ کو تیل کی ترسیل خطرے میں پڑجائے گی جس سے بین الاقوامی مداخلت کا ایک نیا باب کھلنے کا امکان ہے، طویل عدم توجہی کے بعد امریکہ کو اچانک مغربی افریقہ کے ممالک میں دلچسپی پیدا ہوگئی ہے، تازہ ترین جیولاجیکل سروے بتاتے ہیں کہ یہ ممالک تیل کے ذخائر سے مالا مال ہیں۔

 

یہی معاملہ زندگی کے ساتھ بھی۔ ہم سب اس دنیاں میں کئی سالوں سے زندگی گذار رہے ہیں اور طرح طرح کی مشغولیات میں مصروف ہیں اور آخر کار اب ہماری زندگی کا سفر اختتام کو پہنچنے والا ہے ، لہٰذا، ایک طویل سفر پر نکلے ہوئے ٹرین کے ان مسافروں کی طرح جو اب اپنے منزل پر پہنچنے والے ہیں ، ہمیں بھی  ارد گرد بکھرے ہوئے اپنے ساز و سامان کو سمیٹنے کا عمل شروع کرنا ضروری ہے۔

 

عسکریت پسندوں کے بیانیہ میں ایک بات یہ بھی آتی ہے کہ وہ سیکورٹی فورسز کے ہاتھوں ذاتی طور پر سطح پر شدید ذلت اٹھا چکے ہیں۔ عیسی کے ساتھ ایسا کچھ بھی نہیں ہوا ہے۔ نہ ہی اسے کوئی اذیت پہنچائی گئی اور نہ ہی اس کا کبھی سیکورٹی اہلکاروں کے ساتھ تصادم کا کوئی معاملہ سامنے آیا ہے۔ لہٰذا، عسکریت پسند اسلام کی طرف اس کا رخ کرنا ایک مکمل ذاتی سطح پر مذہنی نظریہ میں تبدیلی کا نتیجہ ہے جو کہ وادیٔ کشمیر کے اندر بہت سے لوگوں کے لئے پریشانی کا باعث رہاہے۔

 
Death Is an Inevitable Leap into the Unknown  موت ایک ناگزیر حقیقت ہے
Maulana Wahiduddin Khan
Death Is an Inevitable Leap into the Unknown موت ایک ناگزیر حقیقت ہے
Maulana Wahiduddin Khan, Tr. New Age Islam

شاید گراہم نے اسے دلاسہ دینے کے لئے کچھ حکمت بھرے الفاظ کہے ہوں گے اور اس کا المیہ ٹل گیا ہوگا، لیکن یہاں میں موت کا قرآنی نقطہ نظر پیش کرنا چاہوں گا۔ قرآن کے مطابق انسانی زندگی کو دو مرحلوں میں تقسیم کیا گیا ہے - موت سے پہلے کا مرحلہ اور موت کے بعد کا مرحلہ۔ موت سے پہلے کے مرحلے میں موجودہ دنیا کی زندگی شامل ہے۔ ایک سروے کے مطابق اس دنیا میں اوسطاًایک شخص کی زندگی 70 سال ہے۔ اور موت کے بعد کا دور زندگی کا ایک دوسرا مرحلہ ہے ، جو کہ ابدی ہو گی۔

 

گزشتہ چند سالوں کے دوران انتہائی عجیب و غریب خیالات کی حامل شدت پسند تنظیموں کی ایک نئی شکل جو کہ شمال ہند کے مسلم جماعتوں اور ان کے افکار و نظریات سے بالکل مختلف ہے، ظہور پذیر ہوئی ہے۔ کیرل میں "ندوۃ المجاھدین"، تامل ناڈو میں "جماعت التوحید"، حیدرآباد میں "جمعیت المفلحات" اور بنگلور میں "ڈسکور اسلام ٹرسٹ" اور ان کے علاوہ متعدد ایسی تنظیمیں وجود پذیر ہوئی ہیں، جن کا آن لائن مواد نظریاتی سطح پر انتہا پسندی کو فروغ دیتا ہے، جو کہ بغیر تحقیق و تفتیش کے مسلم نو جوانوں کو مسلسل فراہم کیا جارہا ہے۔

عالمی ذرائع ابلاغ نے دہشت گردی کو مذہبی رنگ دینے کی کوشش کے ساتھ ساتھ اسے ایک مخصوص خطے سے منسوب کرنے کی بھی کوشش کی یہ فرض کرتے ہوئے کہ اس مخصوص خطے کے لوگ اسلام کے پیروکار ہیں، حالانکہ دہشت گردی ایک ایسا فعل ہے جو اس کے فاعل یعنی انسان سے سرزرد ہوتا ہے اس سے قطع نظر کہ اس کا رنگ یا عقیدہ کیا ہے، یہ فعل بد نیتی اور فرسودہ انتخاب کا شاخسانہ ہے اور یہ صفات انسانی  ہیں اور بطور انسان سب میں پائی جاتی ہیں چاہے اس انسان کا تعلق کسی بھی نسلی گروہ، مذہب، جماعت یا فرقے سے ہو۔

 

بابری مسجد مقدمے کی کیفیت اب ایک ایسی کشتی کی ہے جس کے خدا کے فضل سے درجنوں کھیون ہار ہیں ، لیکن جس کے کسی ساحل سے لگنے کی امید نہیں لیکن کیونکہ ہر شخص ایک مختلف سمت میں چپو چلارہا ہے ۔ اب نہایت شدّت سے اس بات کی ضرورت کہ کچھ ذمہ دار قانون داں حضرات یا کوئی تنظیم اب تک کم از کم سپریم کورٹ میں ہوچکی کارروائی کو قوم کے سامنے لائے اور آئندہ کاروائی کو زیر جائرہ (monitor) کرے۔

حضرت عائشہ رضی اﷲ عنہا سے مروی ہے کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم رات کو  اکثر قیام فرماتے اور اللہ تعالی کی عبادت  میں مشغول رہا کرتے۔ کثرتِ قیام کی وجہ سے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے مبارک پاؤں سوج جاتے۔حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا  فرماتی ہیں میں نے عرض کیا : یا رسول اللہ صلی اﷲ علیک وسلم ! آپ تو اللہ تعالیٰ کے محبوب اور برگزیدہ بندے ہیں پھر آپ اتنی مشقت کیوں اٹھاتے ہیں؟ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا : ترجمہ : ’’کیا میں اللہ تعالیٰ کا شکرگزار بندہ نہ بنوں۔‘‘ (صحیح مسلم)

11/9 حادثے کے 17 سال بعد بھی اسلام کے نام پر دہشت گردی کے خاتمے کے کوئی آثار ظاہر نہیں ہوتے۔ عراق اور شام میں نام نہاد داعش کو اگر چہ شکست ملی ہے، لیکن افریقہ اور جنوبی ایشیا میں یہ فروغ پا رہا ہے۔ بہت سے طالبان دہشت گرد اب داعش میں شامل ہو کر افغانستان میں تباہی مچا رہے ہیں۔ مصر کی جدید تاریخ میں انجام دئے جانے والے ایک انتہائی شدید ترین حملے میں داعش کے دہشت گردوں نے نومبر 2017 کو ایک صوفی مسجد کو نشانہ بنایا جس میں صرف 800 آبادی والے شہر کے 305 افراد ہلاک ہوئے اور 128 افراد زخمی۔ اس حملے کا شکار ہونے والے لوگ بنیادی طور پر صوفی مسلمان تھے۔ صوفی مزارات اور ان کے زائرین کو دنیا بھر میں اسلام پسند دہشت گرد نشانہ بنا رہے ہیں، اور خاص طور پر پاکستان، لیبیا، مالی اور ایران میں ہزاروں افراد کی جانیں تلف کر رہے ہیں اور مزارات مساجد اور لائبریریوں کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔ان سب کے باوجود ہمیں مسلم لیڈروں سے اسلام پسند دہشت گردی کے خلاف صرف زبانی بیان بازیاں ہی سننے کو ملتی ہیں۔ اسلامی فقہی تعلیمات کو مطلق العنانیت ، دوسروں سے نفرت ، عدم روادار ی اور جارحانہ جہاد کے ذریعے اسلامی رقبے میں اضافہ کرنے کے ایک تاریخی محرک سے پاک کرنے کے لئے کوئی ٹھوس عمل قدم نہیں اٹھایا گیا ہے۔ لوگوں کا خیال ہے کہ کم از کم صوفی مسلمان، جو ایک طویل عرصے سے جہادی نظریہ کا شکار رہے ہیں ، جو کہ جدید خارجی سلفیت کی ہی ایک شاخ ہے - اپنا محاسبہ کریں گے اور اپنی فقہی تعلیمات کا جائزہ لیں گے اور انہیں سیاسی اسلام کے عناصر سے پاک کریں گے۔

 

آیت 2:190 سے حاصل شدہ نکات کی تلخیص اس طرح کی جا سکتی ہے کہ یہ آیت سب سے پہلی بار جنگ کی اجازت میں نازل ہوئی ہے۔ محکم آیت ہونے کی وجہ سے یہ دفاعی جنگ کے لئے اصول و ہدایات کا تعین کرتی ہے اور ہر قسم کے ظلم و زیادتی سے روکتی ہے۔ 21 ویں صدی میں لوگوں نے پرامن بقائے باہمی کو فروغ دینے اور امن معاہدوں کو برقرار رکھنے کے لئے کچھ خاص قوانین وضع کر رکھے ہیں، لہٰذا، کسی بھی امن پسند کے خلاف جنگ شروع نہیں کی جانی چاہیے۔

 

لہذا، مسلم معاشرے کے دانشورانہ حلقے میں ان کے اس اہم بیان کا خیر مقدم کیا جا رہا ہے۔ چنئی کے اسلامی فورم برائے فروغ اعتدال پسند نظریات کا کہنا ہے کہ : "ہندوستانی اسلام قرآنی اسلام کی بہترین تفسیر ہے۔ ہندوستانی مسلمانوں کا ہمیشہ سے یہ ماننا رہا ہے کہ اسلام اتحاد پسند ہے۔ یہ کانفرنس اسی عقیدے یاددہانی ہے۔ کچھ عرصہ قبل ہی وزیراعظم نے کہا تھا کہ ہندوستانی مسلمان بالکل ہی بنیاد پرستی کا شکار نہیں ہوئے ہیں۔"

 

مسلمانوں کو اپنا محاسبہ کرنا ہوگا اور انہیں اپنی سیاسی ترجیحات کے بارے میں گہرے تفکر و تدبر کے ساتھ کام لینا ہوگا۔ انہیں خود سے یہ سوال بھی کرنا ہو گا کہ آیا ان کے اس فقہی نظریہ میں کوئی خامی تو نہیں ہے جس پر وہ اب تک عمل پیرا ہیں۔ اگر مسلم معاشرہ جدیدیت کے بارے میں اپنے نوجوانوں کو تعلیم یافتہ کرنے میں تردد کا اظہار کرتا ہے اور لاکھوں چھوٹے بچوں کی تعلیم میں رکاوٹ بنتا ہے تو یقین کر لیں کے خامی خود ہمارے اندر ہے۔ اس کے علاوہ ایک مسئلہ یہ بھی ہے کہ خود ایک ملک کے نظریہ کے ساتھ مسلم فقہ کا تعلق پیچیدگی کا شکار ہے۔

 

جو شخص ان چار اسلامی فقہی مذاہب (حنفی، مالکی، شافعی اور حنبلی)، یا دو شیعی اسلامی فقہی مذاہب (جعفری اور زیدی)، یا عبادی یا ظاهري میں سے کسی ایک پر بھی عمل کرتا ہے وہ مسلمان ہے۔ اس شخص کو مرتد قرار دینا ناجائز ہے۔ بے شک اس کا خون، اس کی عصمت اور ملکیت حرام ہے۔ اس کے علاوہ، شیخ الاظہر کے فتوی کے مطابق، یہ نہ تو ممکن ہے اور نہ ہی جائز ہے کہ اشعری عقیدے کو ماننے والوں یا حقیقی تصوف پر عمل کرنے والوں کو مرتد قرار دیا جائے۔

 

اس امر کی وضاحت کرتے ہوئے کہ ہندوستان متعدد مذہب و ثقافت کا روادار ہے وزیراعظم مودی نے کہا کہ ، "ہندوستان میں ہر مذہب کا جنم ہوا ہے اور یہاں اسے فروغ بھی حاصل ہوا ہے۔ ہر ہندوستانی کو اس پر فخر ہے، اس سے کوئی فرق نہیں کہ وہ کونسی زبان بولتا ہے، اس کا مذہب کیا ہے، وہ مندروں میں دیہ روشن کرتا ہے یا مسجدوں ، گرجا گھروں یا گرودواروں میں عبادت کرتا ہے۔"

 
Respecting All Religions  تمام مذاہب کو احترام سے نوازنے کا تصور
Maulana Wahiduddin Khan
Respecting All Religions تمام مذاہب کو احترام سے نوازنے کا تصور
Maulana Wahiduddin Khan, Tr. New Age Islam

دنیا میں ہزاروں دیگر مذہب اور فرقوں کے علاوہ تقریبا درجن بھر بڑے مذاہب بھی ہیں۔ اس صورت میں اختلافات اور عدم موافقت کا پیدا ہونا ناگزیر ہے جو کہ تنازعات کا باعث بنتے ہیں۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ ہم کس طرح ان تمام مذاہب کے پیروکاروں کے درمیان ایک اتحاد کا ماحول پیدا کر سکتے ہیں، تاکہ ہم سب امن اور ہم آہنگی کے ساتھ زندگی بسر کر سکیں؟

 

‘‘اسلام ایک پرامن مذہب ہے اور یہ بات صریحاً غلط ہوگی کہ دہشت گردی اور پر تشدد انتہا پسندی کے لئے کسی طور اسلام کو قصور وارٹھہرایا جائے۔ مذہب اسلام اپنے ماننے والوں کو امن اور سلامتی کا درس دیتاہے جبکہ دہشت گردی یا پرتشدد انتہا پسندی چند افراد کا ذاتی قبیح فعل ہے۔ یہ ذاتی عناصرہی ہیں جو مذہب کا نام لیکر دنیا میں تباہی، قتل عام اور بربادی پھیلارہے ہیں جس کی مذہب ہرگز اجازت نہیں دیتا۔

 

سوچنے والے دماغ کے علاوہ ان کے پاس ایک حساس دل بھی تھا۔ وہ ایک بہتر وکیل تھیں کیونکہ وہ سن سکتی تھیں اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کے متاثرین کے درد کو محسوس کر سکتی تھیں۔ ان کی وراثت اس بات کا ثبوت ہے کہ پاکستانی معاشرہ معاملہ فہم، با کردار اور نظریہ مساوات کے حامل افراد پیدا کرسکتا ہے۔

 

مجھے یقین ہے کہ ہندوستانی مسلمان اپنی ثقافت کو فروغ دیں گے، مذہبی اور غیر مذہبی گانوں کو سنیں گے اور خوبصورت قوالیاں گنگنائیں گے۔ اسلام ان کو تعلیم دیتا ہے کہ فیصلہ کرنا صرف خدا کے اختیار میں ہے اور ہر مسلم اپنے اعمال کا ذاتی طور پر خود جوابدہ ہے۔ اگر خدا نے مسلمانوں کے معاملات کی نگرانی کرنے کے لئے علماء کو مامور نہیں کیا ہے تو وہ علماء خود کو اس پر مامور کرنے والے کون ہوتے ہیں؟

 


Get New Age Islam in Your Inbox
E-mail:
Most Popular Articles
Videos

The Reality of Pakistani Propaganda of Ghazwa e Hind and Composite Culture of IndiaPLAY 

Global Terrorism and Islam; M J Akbar provides The Indian PerspectivePLAY 

Shaukat Kashmiri speaks to New Age Islam TV on impact of Sufi IslamPLAY 

Petrodollar Islam, Salafi Islam, Wahhabi Islam in Pakistani SocietyPLAY 

Dr. Muhammad Hanif Khan Shastri Speaks on Unity of God in Islam and HinduismPLAY 

Indian Muslims Oppose Wahhabi Extremism: A NewAgeIslam TV Report- 8PLAY 

NewAgeIslam, Editor Sultan Shahin speaks on the Taliban and radical IslamPLAY 

Reality of Islamic Terrorism or Extremism by Dr. Tahirul QadriPLAY 

Sultan Shahin, Editor, NewAgeIslam speaks at UNHRC: Islam and Religious MinoritiesPLAY 

NEW COMMENTS

  • "The Mutazilite theologians argued that human free will was....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Excellent reply from Sultan Shaheen sahib to Zawahiri. However...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • This Man should be removed from human rights council because....
    ( By Prabhakar Chitrala )
  • Sultan do you want spread terrorism by muslims.? World....
    ( By Prabhakar Chitrala )
  • Does Hats Off understand anything at all? It is not that the western....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Good article
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Whether Hamza Yusuf is included in or excluded from the U.S. Government's ....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • This is not a freedom of religion issue. It is an equal rights issue.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • It's funny that women need a male guardian, women can drive and now can watch football matches....
    ( By Dr. D. Natarajan )
  • The efforts of Sultan Shahin are commendable.'
    ( By Amitabh Tripathi )
  • The issue is not defamation of Islam. The history of Islam is such that nobody ( non-Muslim ) ....
    ( By Biplab Sensarma )
  • How much do you know about Indian intolerance? # Angnao'
    ( By Sarajit Kumar Bairagi )
  • Indian people need loves each other such as Hindu, Christian, sikh, Muslim and others. If you....
    ( By Md Afuan )
  • @Kaushallya Hegde Kumblar Why are you supported pakistan Hindu, because they are not included...
    ( By Md Afuan )
  • @Kaushallya Hegde Kumblar Why are you supported pakistan Hindu, because they are not included ....
    ( By Md Afuan )
  • @Md Afuan Don’t be hypocrite,where is freedom of expression in Pakistan. The moment you write ....
    ( By Kaushallya Hegde Kumblar )
  • Very good attempt. All countries including India should be religiously tolerant'
    ( By Bhabesh Mitra )
  • @Sarajit Kumar Bairagi because both are victims of intolerance.
    ( By Bhabesh Mitra )
  • @Abu Basim Khan Why are you adding the question of Dalit to question of Muslim?'
    ( By Sarajit Kumar Bairagi )
  • Any comment about Indian democracy, follow up and implementation of constitutions, atrocities...
    ( By Abu Basim Khan )
  • By zehadi intolerance Muslims are harming themselves. See isis .'
    ( By Bhabesh Mitra )
  • @Md Afuan soudi arab is bombing Yemen'
    ( By Bhabesh Mitra )
  • @Abu Basim Khan He is trying to legitimate robbery n killing of Iraq n Afghanistan.'
    ( By Mansoor Hakkim Ahamed )
  • @Mansoor Hakkim Ahamed yes, it is hired by Modi and party. Some financial tips, he get from...
    ( By Abu Basim Khan )
  • Sameera Latif Journalist
    ( By Paul Jeyaprakash )
  • What nonsense is he talking about in India thousands of mobs have been done by bjp and Congress ...
    ( By Aamir Shaban )
  • Which human rights council biggest criminal and theives are sitting in UN nations.'
    ( By Aamir Shaban )
  • @Jasrotia Jjames Aabraham True tand is the principal cause of strife the world over'
    ( By Randeep Singh )
  • @A.J. Philip Cash Prize is very less. Sounds like double hiran oil sponsored award in the village tournament.'
    ( By Mohammad Arif )
  • @Liyakhath Ali Does not it mean that "content " he raised is not truth/facts?
    ( By Ananda Padmanabhan )
  • The act that hindu extreamist doing it is inherited from islam. Hindus always the believer of secularism. ...
    ( By Raju Dev Nath )
  • @Manorsnjan Mishra Good explaination'
    ( By Raju Dev Nath )
  • Hindustan is place Hindus in world .In past many religions came, converted people, damaged most...
    ( By Manorsnjan Mishra )
  • Jehadi are most successful in their mission and misguide immature muslim youth to be a part of. ...
    ( By Sanesh Ram Maurya Maurya )
  • They burnt, shoot many journalist openly making the video viral, if they will feel that type of torture ....
    ( By Prativa Dash )
  • Mr.Mohammad Arif The author has invincibly enlisted many instances of terrorism in which....
    ( By Dr.A.Anburaj )
  • Indian Muslims as far as possible drop Arabian tint , tilt and refrain from servitude to Arab world....
    ( By Dr.A.Anburaj )
  • Genocide of Hindu- Khafirs is still in full swing in Bangaladesh...
    ( By Dr.A.Anburaj )
  • "Laws of many Western democracies are more Islamic than the Sharia of Islamists." nothing can be ....
    ( By hats off! )
  • Even Sunnah also demands Muslims to love their enemies instead of promote hatred and yet Muslim extremists promote hatred with polytheists ....
    ( By zuma )