certifired_img

Books and Documents

Urdu Section (01 Feb 2019 NewAgeIslam.Com)


Oppression and Aggression Has No Place in Islam جبر اور جارحیت کی اسلام میں کوئی جگہ نہیں


عبد المعید ازہری ، نیو ایج اسلام

امن و آشتی، یکجہتی و ہم آہنگی کے مبلغ نبی نے کسی بھی طرح کے جبر و زور، جارحیت اور سختی کو سرے سے نکار اہے۔ اسے اسلام کا حصہ نہ مانتے ہوئے اپنے ماننے والوں کو اس سے دور رہنے کی تلقین و تعلیم دی۔ اسلام کا نام لیوا کوئی بھی فرد اگر کسی طرح کے تشدد اور جبر و ظلم میں ملوث ملتا ہے تو در اصل وہ پیغمبر اسلام کی تعلیم و تبلیغ کا باغی ہے۔

پیغمبر امن و امان صداقت وانسانیت اور ہم آہنگی و بقائے باہم کی علامت ہیں۔ جنہوں نے سچے مومنوں کوجبر و ظلم،تشدد،تردد، تانا شاہی،استحصال اور جارحیت کے استعمال سے روکا( جو لوگ غیر قانونی معاملات کرتے ہوں، اپنے پڑوسیوں کے ساتھ تشدد کرتے ہوں، کمزو،غریب اور ضرورت مند پر ظلم کرتے ہوں، وہ چاہے مسلم ہو یا غیر مسلم،42:38)۔ فرمان نبی: ''ایک آدمی اس وقت تک مومن نہیں ہو سکتا ہے جو خود پیٹ بھر کھانا کھاتا ہو اور اس کا پڑوسی بھوکا رہ جائے‘‘۔

خالق کائنات نے قرآن کریم میں اپنے رسول کی تعریف اس طرح بیان فرمائی ہے:

آپ نبیوں میں بہترین نمونہ ہیں۔ ان لوگوں کے لئے جو اللہ تعالی اور آخری دن میںیقین رکھتے ہوں اور اللہ تعالی کو بہت یاد کرتے ہوں(سورت الاحباب)

رسول اللہ نے اپنی زندگی میں ہر کرداربحسن و خوبی نبھایا۔ آپنے انتہائی راستبازی اور صداقت کے ساتھ لیڈرشپ کی ذمہ داری نبھائی،ایک شوہر،والد، رشتہ دارہیں اوربہتر دوست ہر رشتے کو احترم بخشا ۔آپ ہمیشہ اپنے دشمنوں کے ساتھ صبراور صلہ رحمی کے ساتھ پیش آئے۔آپ کو ایک مرتبہ معلوم ہوا کہ مکہ میں آپ کا قیام انتشار کا سبب بن سکتا ہے تو آپ امن کے ساتھ مدینہ منتقل ہوگئے ۔ پریشانی کے 20 سال بعد مکہ واپس لوٹے۔آپ نے مکہ میں امن قائم کیااور سابق دشمنوں کے لئے معافی کا اعلان کرتے ہوئے شفقت اور رحم دلی کا مظاہرہ کیا۔ آپ نے ہمیشہ انصاف کیا۔ چاہے وہ سماجی ہو، سیاسی ہویا پھر اقتصادی ہو۔آپ نے کبھی ناانصافی اور ظلم نہیں کیا اور نہ ہی کبھی اس کی اجازت دی۔

URL: http://www.newageislam.com/urdu-section/abdul-moid-azhari,-new-age-islam/oppression-and-aggression-has-no-place-in-islam--جبر-اور-جارحیت-کی-اسلام-میں-کوئی-جگہ-نہیں/d/117613

New Age Islam, Islam Online, Islamic Website, African Muslim News, Arab World News, South Asia News, Indian Muslim News, World Muslim News, Women in Islam, Islamic Feminism, Arab Women, Women In Arab, Islamphobia in America, Muslim Women in West, Islam Women and Feminism





TOTAL COMMENTS:-   6


  • These people writer on peace and harmony messages of Islam but never specifically tell which Muslim organisations are extremists or terrorists. They will never writer on atrocities and unIslamic practices of isis. Ask Mr Azhari and he will turn his face away.
    By arshad - 2/7/2019 9:15:17 PM



  • You are right mr Javed. Some so called journalists had supported ISIS vociferously in Urdu newspapers but after the government banned it declaring a terrorist organisation, some of them became members of mashaikh board and started writing articles on peace and harmony to hoodwink government agencies. 
    By arshad - 2/6/2019 10:40:37 PM



  • Mashaikh Board plays politics. I have heard its founder makes sifli amal to utilize young people for his politics.
    They did Sufi conference for chapalusi not for genuine fight against terrorism 
    Its founder is self acclaimed sufi

    By Javed - 2/6/2019 9:56:43 AM



  • Yes Ms Fatima you are right. those who were glorifying ISIS during 2014 and villifying those condemning it are now talking of peace and secularism because they know the ISIS has been banned and they are under government scanner. They have hid behind Ulema and Mashaikh for the time being until another extremist outfit comes out and declares their so called khilafat.
    By arshad - 2/6/2019 5:21:40 AM



  • KYA DAHSHATGARD AISE HOTE HAIN? JO ULEMA MASHAIKH BD ME CHHUP JATE HAIN
    By arshad - 2/2/2019 10:22:49 PM



  • Unfortunately, we say one thing and practice something else. The Holy Qur’an says: “Allah will never change the condition of a people until they change what is within themselves.” Surah Al-Ra’d - Ayah 11 (13:11).


    By Kaniz Fatma - 2/2/2019 12:01:57 AM



Compose Your Comments here:
Name
Email (Not to be published)
Comments
Fill the text
 
Disclaimer: The opinions expressed in the articles and comments are the opinions of the authors and do not necessarily reflect that of NewAgeIslam.com.

Content